پاکستانتازہ ترین

ایفیڈر ین کو ٹہ الا ٹمنٹ کیس،فیصلہ محفوظ ،پیرکو سنائے جانے کاامکان

rawalpindiراولپنڈ ی (بیورو رپورٹ) انسدا د منشیات کی خصو صی عدا لت کے جج ار شد محمو د تبسم نے ایفیڈر ین کو ٹہ الا ٹمنٹ کیس کے ایک ملز م ند یم ظفر اور چو ہد ر ی عنصر کی جا نب سے عد الت کے دا ئر ہ کا ر اختیار سما عت کے خلا ف دا ئر در خو است پر فر یقین وکلا ء کے دلا ئل سما عت کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا ہے جو کہ 30ستمبر کو سنا ئے جا نے کا امکا ن ہے عدا لت نے چند روز قبل ضما نتیں خا رج ہو نے پر گر فتار کئے جا نے والے تین ملز ما ن کے خلا ف حتمی چا لا ن پیش کر نے کے لئے اے این ایف کی مہلت کی استد عا منظور کر لی جبکہ مقد ما ت کی سما عت 11اکتوبر تک ملتوی کردی، جمعہ کے روز ایف آ ئی آ ر نمبر 40کے ملز ما ن علی مو سی گیلا نی ، مخدو م شہا ب الد ین، چو ہدر ی عنصر فاروق، افتخا ر با بر ، نثار شیخ ،عبد الستار سورا نی و غیرہ عد الت میں مو جو د تھے اے این ایف نے عدا لت کو بتا یا کہ اس مقد مہ میں کر نل (ر)طا ہر الودود لا ہو تی کوگر فتار لر لیا گیا ہے لہذا اے این ایف کو مہلت دی جا ئے کہ وہ اس مقد مہ کا حتمی چا لا ن تیار کر کے عدا لت میں پیش کر سکے اے این ایف نے مسلم لیگ (ن) کے سا بق ر کن قو می اسمبلی محمد حنیف عبا سی کے خلا ف درج مقدمہ نمبر41 میں عد الت کو بتا یا کہ اس مقد مہ میں دو ملز ما ن با سط عبا سی اور احمد بلا ل جو ڈ یشل ر یما نڈ پر ہیں ان کے خلا ف بھی چا لا ن مکمل کر نا ہے عدا لت نے اس کیس میں بھی سما عت11اکتو بر تک ملتوی کر تے ہو ئے اے این ایف کو ہدایت کی کہ وہ دو نو ں مقد ما ت کا حتمی چا لا ن آ ئندہ سما عت پر عدا لت میں پیش کر ے حنیف عبا سی ، اور اس کیس میں نا مزد د یگر ملز ما ن کمر ہ عدا لت میں مو جو د تھے عدا لت کے دا ئر ہ اختیار پر بحث کے دوران ایک مو قع پر وکیل صفائی عبد الر شید شیخ ایڈو کیٹ اور اے این ایف کے سپیشل پر اسیکیوٹر شا ہد محمو د عبا سی میں قا نو نی نکتہ کی وضا حت کے دوران تلخ جملو ں کا بھی تبا دلہ ہو ا وکیل صفائی عبد الر شید شیخ ایڈو کیٹ کا کہنا تھا کہ میں قا نو نی دلا ئل کے ساتھ عدا لت کے سامنے بات کر رہاہو ں اور سپیشل پر اسیکیوٹربار با ر ہا ئی کورٹ کی بات کر ر ہے ہیں یہ جا ئیں ہا ئی کورٹ میں میر ے خلا ف تو ہین عد الت دائر کر یں ،جس پر عدا لت نے سپیشل پر اسیکیوٹر اے این ایف کو اضا فی جملو ں سے روک دیا عبد الر شید شیخ کا کہنا تھا کہ کنٹرول سبٹا نسسز اور کنٹرول نا ر کو ٹیکس الگ الگ معا ملہ ہے ایفیڈ ر ین کو کسی بھی کنو نشن یا کسی بھی حکو مت نے کنٹرول نا ر کوٹیکس قرار نہیں دیا نہ ہی اس ضمن میں کو ئی نو ٹیفکیشن مو جو د ہے اگر ہے تو یہ ثا بت کر یں انھو ں نے کہا کہ اگر ایفیڈرین اتنی ہی خطر نا ک چیز تھی تو 1988سے اب تک اسے نا ر کو ٹیکس کے زمر ے میں کیو ں قرار نہیں دیا گیا جب تک ایفیڈ رین کا نو ٹیفکیشن نہیں اسے نا ر ٹیکس میں شا مل نہیں کیا جا سکتا یہ عا م حیثیت کا کیس تھا جسے اے این ایف نے خو اہ مخو اہ بنا دیا ایفیڈ رین کیس میں ایک ملز م ملتا ن کا ہے جس نے لا ہور سے ایفیڈرین خر یدی ملتان میں فیکٹری میں ادویات مینو فیکچرز ہو ئی مقد مہ اے این ایف پنڈی نے درج کیا اسی طر ح دیگر ملز ما ن کی چو ہدری عنصر فاروق ،خو اجہ اسد ،وغیرہ کی فار ما سیو ٹیکل کمپنیا ں اسلا م میں ہیں مگر کیس پنڈ ی اے این ایف میں در ج ہے انھو ں نے کہا کہ اگر کیس بنتا ہے تو وہ ڈرگ رولز کے تحت ڈر گ انسپکٹر کا اختیار تھا عدا لت نے بحث کے بعد فیصلہ محفو ظ کر لیا ۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button