پاکستان

انجمن طلبائ اسلام کے نوجوان پاکستان کی نظریاتی وجغرافیائی کی سرحدوں کی نگہبانی کافریضہ اداکررہے ہیں،رحمان ملک

لاہور﴿ امتیازعلی شاکر﴾ دفاع پاکستان کا فریضہ پاک فوج اور سیکو رٹی ادارے بخوبی ادا کر رہے ہیں۔قیام پاکستان کے مخالفین مستحکم پاکستان کے کبھی حامی نہیں ہوسکتے ملک و ملت کی نوجوان نسل کو دہشت گردی کی آگ میںدھکیلنے والوں کا چہرہ بے نقاب ہو چکا ہے ۔وطن عزیز میں قیام امن کیلئے طلبا ئ اپنا اہم کردار با احسن ادا کریں تو ملک وملت کا مقدر بدل سکتا ہے۔ نوجوانوں کو گمراہ کر نے والے کسی غلط فہمی کا شکار نہ ہوں با شعور طلبہ ان کے ناپاک عزائم کو ناکام بنانے کیلئے میدان عمل میں آچکے ہیں سیکورٹی فورسز اور عوام کا قتل عام کر نے والے کسی رعائت کے مستحق نہیں ہیں دھشت گرد عناصر کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ ایسے عناصر ملک وملت اور اسلام کے نام پر دھبہ ہیں انجمن طلبائ اسلام کے نوجوان پاکستا ن کی نظریاتی و جغرافیائی کی سر حدوں کی نگہبانی کا فریضہ ادا کر رہے ہیں۔انجمن طلبائ اسلام کے ملک گیر پیغام انقلاب امن کنونشن سے وزیر داخلہ رحمان ملک ، مرکزی صدر ATIرضوان یوسف ، سابق صدر عثمان خان نوری سابق MNA، شیخ احمد دباغ ﴿انگلینڈ﴾،سابق مرکزی صدر ڈاکٹر اظہر محمود ، سید غلام محی الدین گیلانی ، عتیق احمد رضا ، سید آفتاب عظیم بخاری،سابق چیرمین قرآن بورڈعلامہ احمد علی قصوری، صاحبزادہ ذوالفقار احمد صدر PYOنے خطاب کر تے ہو ئے کہا کہ وطن عزیز اپنی تاریخ کے بدترین چوراہے پر ہے۔وطن عزیز کے دشمن پوری مضبوطی سے وطن عزیز کی جڑوں کو کھوکھلا کرنے میں دن رات مصروف ہیں ان کی سازشوں کو نیست و نابود کر نے کیلئے پوری قوم کے ساتھ طلبہ کا کردار سب سے اہم بنتا ہے آج وطن عزیز کو سوچی سمجھی سا زش کے تحت قتل گاہ بنایا جارہے ہے۔ وحشت و بربریت کا راج عام کیا جارہا ہے نظریہ پاکستان کو تباہ و برباد کرنے اور ملک و ملت کوناکام بنانے کیلئے دشمن نے کھلے اور چھپے آپشن کو استعمال کرنا شروع کیا ہو اہے۔ہمارے بیرونی دشمن کو اندرونی دشمن کی بھر پور حمایت حاصل ہے نظریہ پاکستان کے مخالفین کو پر امن اور مستحکم پاکستان کسی صورت برداشت نہیں ہے پوری قو م نے جیسے پہلے متحد ہو کر پاکستان کے دشمن عناصر کو ناکام بنایا ہے اس سے بڑھکر اب پاکستان بچانے کیلئے قربانی کی ضرورت ہے ۔ پاکستانی سیکورٹی فورسز اور عوام کے قتل عام میں ملوث عناصر کے خلاف اگر متحد ہوکر مقابلہ نہ کیا گیا تو یقینا پاکستان کے دشمن کامیاب ہو جائیں گے جو کہ ملک و ملت اور عالم اسلام کے لئے ناقابل تلافی نقصان ہو گا ۔ پاکستان کو ناکام ریاست بنانے والوں کو منہ توڑ جواب دینے کیلئے طلبہ کے کندھوں پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔انجمن طلبائ اسلام کے غیور کارکنان نے ہمیشہ وطن دشمن عناصر کو بے نقاب کرنے اور ملک و ملت کو بچانے کیلئے اپنا کردار اپنا فرض سمجھ کر نبھایاہے کیونکہ اس وطن کی بنیادوں میں ہمارے آباو اجداد کا خون شامل ہے اور اسکی بقاسلامتی خوشحالی کیلئے ہم اپنا تن من سب کچھ قربان کردیں گے لیکن اس کی سلامتی و بقا پر کسی قسم کی آنچ نہیں آنے دیں گے۔ پیغام انقلاب امن کنونشن درحقیقت پاکستان کے خلاف سازش کرنے والوں کیلئے کھلا چیلنج ہے نظریہ پاکستان کے مخالفین مختلف ناموں سے قوم کو ٹکڑوں میں بکھیر نے اور ملک و ملت کا شیراز بکھیرنے کیلئے جو کردار ادا کر رہے ہیں وہ کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے۔ان حالات میں طلبہ پر جوذمہ داری عائد ہوتی ہے طلبائ اس کو نبھانے کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کیلئے یکجان ہیں اور قوم کو دہشت گردی و حشت و بر بریت قتل و غارت سے بچا کر مثالی معاشرہ کیلئے سر گرم عمل ہو چکے ہیں دشمن کی ہر سازش ناکام ہو گی۔ مقررین نے مزید کہاکہ طبقاتی نظام تعلیم کو ختم کر کے یکساں نظام تعلیم رائج کیا جائے قوم کے مستقل ’’طلبہ‘‘ کوورغلانے والے عناصر کو بے نقاب کرکے بلد تفریق کٹہرے میں کھٹرا کر کے عبرتناک سزادی جائے تاکہ قوم کا مستقبل تاریک کرنے والے عناصر کا قلع قمع کیا جاسکے نوجوان نسل کو دہشت گردی کے عفریت سے نجات دلانے کیلئے ان کووسائل مہیا کئے جائیں طلبہ اس قوم کا 65%ہیں لیکن کسی بھی حکومت نے آج تک ان کے مسائل کو حل کرنے کیلئے کو ئی جامع حکمت عملی طے نہیں کی طلبہ کے مسائل کے حل کیلئے طلبائ یو نین پر عائد پابندی ختم کر کے ان کے الیکشن کر وائے جائیں تاکہ طلبہ کی صلاحتوں سے فائدہ اٹھایا جاسکے۔پیغام انقلاب امن کنونشن سے مرکز ی نائب صدر ATIمحمد عاکف طاہر ، ثاقب زیب قریشی ، وسیم مصطفائی ، حافظ شاہد احمد خان، تنویر شاہد ، الیاس کڑیو، نور احمد نورانی ، حافظ سر فراز سیالوی ، عاصم علی میر، میاں عباس علی، سید حسنین کاظمی ، امجد وڑائچ MNAڈاکٹر فضل طارقMNA، سید ضیا اللہ شاہ MPA، ملک
ابراراحمدMNAسمیت دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا۔