تازہ ترینکالممرزا عارف رشید

صدر پاکستان کا خطاب

mirz arifزمانہ طالب علمی میں کسی بھی سکول کا لج یا کسی جگہ بھی تقریری مقابلہ ہوتا تو کلاس کے سب سے ہونہار طالب علم کی تیار ی بھی کر و ائی جاتی تھی سکول کے ٹیچر خود تقریر تیار کرتے اور کہتے تھے ہمارے سکول کا نام روشن کرنا ہے اور یہ مقابلہ جیت کرآنا ہے آج جب تعلیم کا معیار پہلے جیسا نہیں رہا سکولوں میں ٹیچر اپنے شاگردوں کس طرح کی تعلیم دے رہے ہیں سمجھ سے بالترہے پاکستان میں تعلیم 27فیصد باقی رہے گئی ہے اور جب بھی وزیراعظم پاکستان صدر پاکستان وفاقی وزیر ہو یا صوبائی وزیرسب کی کوشیش ہوتی ہے اُردو زُبان میں تقریر نہ ہو کچھ دن پہلے کی بات ہے ممبرقومی اسمبلی سے بھی غلطی ہوگئی اُنہوں نے بھی دوسری زبان میں کہا کہ مسلم لیگ ( ن) ایسے ہی کرپشن کرتی رہے گئی جب کی ٹھیک بات کرنا بھول گئے اور جب ہم کبھی اپنے بزرگ صدر پاکستان کی تقریر سنتے ہیں تو ایسا لگتا ہے جیسے تقریر پو کسی نے نمبر دینے ہیں اگر اچھی تقریر کی تو نمبر مل جائیگئے نہ کی تو پھر کچھ نہیں ملیں گا کچھ دن پہلے صدر پاکستان نے تقریر کی تو ا یسا لگتا تھا جس طرح ہم سکول میں اپنے ٹیچر کو یاد کی گیں تقریر سُنا رہے ہو ملک کے صدر ممنون حسین نے قومی اسمبلی کے ممبروں سے تقریری خطاب فرما ر ہے تھے ایسا لگا جیسے یہ تقریری خطاب نہیں بلکہ کوئی تقریری مقابلہ ہو اور ہیڈ ماسٹر موجودبیٹھے سن رہے ہو تقریر خطاب میں بار بار واہی ایک ہی لفظ جو آج تک نہیں بدل سکے تعریف کی لمبی سی فائل اپنے سامنے رکھ کر بولتے چلے جارہے تھے لوڈشیڈنگ 2018تک ختم کردی جائے گی اب ہمارے ملک میں باہر سے بہت کچھ آنے والا ہے چین پاکستان کو بہت کچھ دے گا اب ہم چین سے رقم لیے کر کارو بار کریں گے چین سے کا جب نام لیا تو یاد آیا صدر ممنون حسین چین کی سیر بھی کر کے واپس آگے ہیں یہ بھی ہوسکتا ہے صدر پاکستان کو چین اس لیے بھیجا گیا ہو اُنہوں نے تقریر اچھی کی ہو بھارت سے دوستی بہت جلد ہو جائے گئی بھارت اپنے ملک میں ہمارا ایک کبوتر تک برداشت نہیں کر سکتا دوستی کیا کرے گا صدرپاکستان کو اس بات کا علم نہیں بھارت جو کچھ کر رہا ہے اُس کی وجہ سے پورے ملک میں دہشتگردی نے اپنی لپیٹ میں لیے رکھا ہے بھارت کے عزام سب کے سامنے ہیں ہم دوستی کا نام لیتے ہیں بھارت فائر نگ کرنا شروع کر دیتا ہے سب سے بڑا دہشتگرد خود بھارت ہے صدر ممنون حسین نے کہا ملک سے بہت جلد دہشتگردی کو ختم کر دیں گے اور جلد سے جلد دہشتگردی پر قابو پالیا جائے گا صدر ممنون حسین پا کستان کا سب سے بڑا شہر کراچی جہاں سے آپ اسلام آباد تشریف لیے کر آئے ہیںآج بھی وہاں معصوم دہشتگردی یا پھر کم نام گولی کی نظر ہو رہے ہیں افواج پاکستان نے پورے ملک میں دہشگردی کو جس طرح ختم کیا یہ کام افواج پاکستان ہی تھا صدر پاکستان ممنون حسین حکومت سے کہی زیادہ کام افواج پاکستان کر رہی ہے اس وقت ضروت جس بات کی ہے وہ ہے انسانیت کی بھائی چارے کی ایک دوسرے کے دلوں سے نفرت کو ختم کرنیکی ہماری حکومت صدر پاکستان اس ملک کو بنیادی چیزکی بہت ز یادہ ضروت ہے وہ ہے خانہ جنگی جس پر آپ نے بات تک نہیں کی چاروں صبوں میں جو کچھ ہو رہا ہے لگتا ہے جب آپ تقریر فرما رہے تھے نہ تو آپ کی زبان آ پ ساتھ دے رہی تھی نہ ہی ہاتھ ساتھ دے رہے تھے ایسا لگ رہا تھا جیسے صدر پاکستان سوچ رہے ہو کب تقریر ختم ہو گی اور میں واپس صدر ہاؤس جاؤ گا دیکھا جا ئے تو تقریر لکھ کر دینے والا کس چیز کا بدلہ لیے رہا تھا اتنی لمبی تقریر لیکھ کر دینا اور پھر یہ بھی نہ سوچنا ہر بات پر حکومت کی تعاریف کرنا بھی کوئی ضروری تو نہیں ہوتا بات بات پر یہ حکومت سب کام اچھے کر رہی ہے اس ملک میں آج تک کسی نے اپنی غلطی کو مانا ہے کبھی نہیں پورے ملک میں بچوں کے لیے قطرے دینا جس طرح ضروری ہو گے ہیں ایسی ہی بڑوں کے لیے بھی قطرے تیار کیں جائیں جس پولیو کا ذکر صدر پاکستان اپنی تقریر میں فرما یا ر اگر واہی پولیو کے قطرے ہمارے ایوان سے شرو ع کیے جائیں تو پھر سب کچھ ٹھیک ہو جائے گا جب تک ایوان میں سے پولیو جیسی خطر ناک بیماری کو ختم نہیں کیا جائیگا اُس وقت تک کچھ بھی ٹھیک نہیں ہو گا ہمارے ملک کو جن چیزوں کی آج بہت زیادہ ضرورت ہے منتخب ہو کر ایوانوں میں آجانے کے بعدسب کچھ بھول جانا بھی بیماری سے کم نہیں اس ملک کا مسلہ بے روزگاری ہے تعلیم ہے اگر ان دونوں پر نظر ڈالی جائے تو بہت کچھ ٹھیک ہو سکتا ہے ا س ملک سے تقریری نظام کو ختم کرنا ہو گا اب ضرورت ہے اس کو آگے لیے کر جانے کی اس ملک میں ایسی تعلیم کا ہونا ضروری ہو گیا ہے جس سے پاکستان کا ہر طلب علم پوری دنیا سے جیت کر آئے ؟؟؟

یہ بھی پڑھیں  سنجھورو:مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد کی مسلم لیگ (ف) میں شمولیت

note

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker