علاقائی

ساہیوال:ملزم کی دوران حراست گمشدگی کے خلاف ساہیوال میں مشتعل مظاہرین کااحتجاج

ساہیوال ﴿نامہ نگار﴾ نور شاہ پولیس نے تھانہ کا گھیرائو پتھرائو ‘ ہنگامی آرائی ‘ روڈ بلاک کرنے اور پولیس سے زیر حراست ملزم کو چھڑانے کے الزامات میں تین سو سے زائد افراد کے خلاف مقدمہ درج کرلیا لاپتہ ہونے والا ملزم شوکت شوکی برآمد نہ ہوسکا دوسری جانب ورثائ کا موقف ہے کہ ملزم کو پولیس نے تشدد کرکے ہلاک کردیا ہے تفصیلات کے مطابق پولیس تھانہ نور شاہ نے ڈکیتی کے مقدمہ میں شوکت عرف شوکی کو گرفتار کرلیا اور دس روز تک حراست میں رکھنے کے باوجود پولیس کوئی ریکوری نہ کر سکی شوکت عرف شوکی جو کہ دمہ کا مریض تھا 23 مارچ کو جب پولیس کی حراست میں تھا اس پر بیماری کا حملہ ہوا تو پولیس نے اسے ہسپتال منتقل کردیا جہاں سے وہ لاپتہ ہوگیا پولیس کا موقف ہے کہ ڈاکٹر کے کلینک سے ملزم کی رشتہ دار خواتین نے زبردستی ملزم کو پولیس کی حراست سے چھڑالیا جبکہ شوکت عرف شوکی کے ورثائ نے خدشہ طاہر کیا ہے کہ پولیس تشدد سے شوکت عرف شوکی کی ڈاکٹر کے کلینک پر موت ہوگئی اور پولیس نے غائب کردیا جس پر سینکڑوں افراد نے فیصل آباد نور شاہ تھانے کا گھیرائو کیا مظاہرین نے تھانہ پر پتھرائو بھی کای سات گھنٹے اور رات گیارہ بجے پولیس نے مذاکرات کے بعد تریفک بحال کرائی مگر 24 گھنٹے گزر جانے کے باوجود ملزم شوکت عرف شوکی کی بازیابی نہیں ہوسکی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ساہیوال رانا محمد ایاز سلیم نے شوکت عرف شوکی کی بازیابی کیلئے پولیس کی خصوصی ٹیم بنا دی ہے جو تفتیش کررہ ی ہے پولیس نے ہنگامہ آرائی کے مرتکب ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

یہ بھی پڑھیں  اوکاڑہ :ایک شخص نے گھر میں گھس کر نوجوان لڑکی کو بے آبرو کردیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker