تازہ ترینعلاقائی

سنجھورو:انسیٹیٹوٹ آف ہیلتھ اینڈ میڈیکل سائنسزشہدادپورکی اسامیوں کی بندربانٹ جاری

سنجھورو (نامہ نگار) انسیٹیٹوٹ آف ہیلتھ اینڈ میڈیکل سائنسز شہدادپور کی اسامیوں کی بندر بانٹ جاری ۔حقدار امیدوار ملازمت سے محروم ملازمت کے حصول کے لئے 11ہزاربے روزگار امیدواروں نے درخواستیں جمع کرائی تھی ۔انٹریو سے پہلے ہی کامیاب امیدواروں کی فہرستیں تیار ہو گئی،بے روزگار نوجوانوں نے انٹریو کو ڈھکوسلہ قرا دے دیا۔01سے لے کر 16گریڈ تک کی اسامیوں کو صرف اورصرف ایک سادہ انٹرویو کے زریعے پر کیا جارہا ہے۔ تفسیلات :۔انسیٹیٹوٹ آف ہیلتھ اینڈ میڈیکل سائنسز شہدادپور کو انسٹیٹیوٹ کا درجہ ملنے کے بعد حکومت سندھ کی جانب سے مورخہ 15-04-12کو علاقائی اور قومی خبارات میں مختلف شعبوں میں اسامیوں کو پُر کرنے کے لئے اشتہارات دئے گئے تھے جس کے تحت ان اسامیوں کو معیا رپر پورا اترنے والے بے روزگار نوجوانوں سے درخواستیں طلب کی گئی تھی،اور مقررہ تاریخ تک 11ہزار درخواستیں موصول ہوئی جن کے 29نومبر تا 04دسمبر 2012تک انٹرویو لینے کا اعلان کیا گیاجس پر اہل امیدواروں نے انٹرویو دیئے۔ اس سلسلے میں انتہائی با وثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ انٹرویو سے قبل ہی ان اسامیوں کے لئے پہلے ہی فہرستیں تیا ر کر کے سیاسی جماعتوں نے بندر بانٹ کر لی ہے اور انٹرویوکو خانہ پوری کے لئے کیا جا رہا ہے۔اہل امیدواروں کی جگہ سیاسی کارکنوں اور ڈاکٹروں کے رشتیداروں کے نام کامیاب امیدواروں کی فہرست میں شامل کئے گئے ہیں۔واضع رہے کی ان سامیوں میں 01سے لے کر 16گریڈ تک کی اسامیوں کو صرف اورصرف ایک سادہ انٹرویو کے زریعے پر کیا جارہا ہے جس کے زریعے میرٹ پربھرتیاں ایک سولیہ نشان ہے۔اس اطلاع پر اہل امیدواروں میں مایوسی پھیل گئی ہے ا ور میرٹ کی دھجیاں اڑانے پر اپنے شدید ردِعمل کا اظہار کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کی ہے کہ اس معاملے کا از خود نوٹس لیتے ہوئے اس نام نہاد انٹرویو کو کالعدم قرا دیا جائے اور اہل امیدواروں کو ان اسامیوں پر بھرتی کیا جائے۔بے روز گار امید واروں نے حکومت کو انتباہ کیا ہے کہ اگر اہل امیدواروں کے بجائے من پسند افراد کو بھرتی کیا گیا تو سخت احتجاج کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں  ٹیکسلا:جوان بیٹے نے بوڑھی ماں کو فائرنگ کر کے موت کے گھاٹ اتار دیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker