تازہ ترینعلاقائی

تحصیل سنجھورو کے تین لاکھ عوام جدید بینکنگ سے محروم

نجھورو(سٹی رپورٹر) سنجھورو ضلع سانگھڑ کا قدیم شہر ہے جس کو 1901ء میں تحصیل کا درجہ دیا گیا تھا۔ تحصیل سنجھورو نہ صرف تیل اور گیس کی دولت سے مالا مال ہے بلکہ اس علاقے کا شمار پاکستان کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جہاں سب سے زیادہ کپاس پیدا ہوتی ہے۔سنجھورو کے عوام جہاں دور جدید کی دیگر سہولیات سے محروم ہیں وہیں جدید بینکنگ کی سہولیات سے بھی محروم ہے۔سنجھورو کے بینکوں میں آج بھی پچھلی صدی کی طرح پرانے رجسٹر اور پیتل کے ٹوکن کا رواج ہے۔ آج کے دور میں بھی نیشنل بینک میں نہ صرف کسٹمر کو پیتل کا ٹوکن دیکر چیک پاس کرانے کے لئے گھنٹوں انظار کرایا جاتا ہے بلکہ چیک کے ساتھ شناختی کارڈ کی کاپی اور دیگر فارملٹیزطلب کی جاتی ہیں۔سنجھورو کے بینکوں میں آج بھی اکاؤنٹ کھلوانے کے لئے نہ صرف سفارشیں لگوانا پڑتی ہیں بلکہ اکاؤنٹ کھلوانے کے لئے کئی کئی ماہ بینکوں کے چکر کاٹنے پڑتے ہیں۔تحصیل کے تینوں بڑے قصبوں سنجھورو، کھڈرو اور جھول سمیت کسی بھی علاقے کی کسی بھی بینک میں ATM کی سہولت موجود نہیں ہے۔ سنجھورو کے عوام کو جب بھی بینک ٹائیم کے بعد ایمر جینسی میں رقم کی ضرورت ہوتی ہے تو ATM سے رقم نکلوانے کیلئے علاقے کی ٹوٹی پھوٹی سڑکوں سے گذر کر آس پاس کے شہروں سانگھڑ یا شہدادپور جاناپڑتا ہے جو کہ راہزنی کی بڑھتی ہوئی وارداتوں کے باعث ایک بڑا رسک ہے۔تحصیل سنجھورو کے تحصیل ہیڈ کوارٹر سنجھورو میں صرف تین بینک (نیشنل بینک، زرعی ترقیاتی بینک اور ؤنائیٹڈ بینک کی برانچیں) ہیں۔ نیشنل بینک کے عملہ کے غیر ذمہ دارانہ اور ہتک آمیز رویہ اور دیگر بینکوں میں ATM سمیت دیگر جدید سہولیات میسر نہ ہونے کے باعث سنجھورو کے تاجر سانگھڑ، شہدادپور اور دیگر شہروں کے بینکوں میں اپنے اکاؤنٹ کھلوانے پر مجبور ہیں۔ سنجھوروکے سماجی و عوامی حلقوں نے گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان، دیگر اعلیٰ حکام اور دیگر بینکوں کے حکام سے پر زور اپیل کی ہے کہ سنجھورو کی سنجھورو کے بینکوں میں بھی جدید بینکاری کا نظام قائم کرایا جائے بالخصوص سنجھورو کے عوام کوATM کی سہولت میسر کی جائے اور نیشنل بینک کے عملہ کو کسٹمر سے اچھا رویہ اپنانے کا پابند بنایا جائے۔

یہ بھی پڑھیں  جسٹس جواد کا جیو گروپ کے کیس سے الگ نہ ہونیکا فیصلہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker