تازہ ترینعلاقائی

ہمارے کسان کی معیشت روزبروز کمزور ہوتی جا رہی ہے۔سردار ظفر حیسن

لاہور (پریس ریلز) کسان بورڈ پاکستان کے مرکزی صدر سردار ظفر حسین خان نے پریس کلب لاہور میں پریس کے نمائندوں سے خطاب کرتے ہوئے زرعی ٹیوب ویلز کے بھاری بلوں کے بارے میں اظہار خیال کیا۔ ان کے ساتھ صدر وسطی پنجاب چوہدری نور الہٰی تتلہ، ضلعی صدر نارووال غضنفر علی مرزا، ضلعی صدر حافظ آباد چوہدری امان اللہ چٹھہ، ضلعی صدر قصور رانا خالد مسعود خان، صوبائی و ضلعی سیکرٹریز بھی موجود تھے۔ صدر کسان بورڈ پاکستان نے کہا کہ پاکستان کے کسان زرعی ٹیوب ویل کے لیے بجلی کے وہ بدنصیب صارف ہیں جو اکیسویں صدی کی اذیت ناک لوڈشیڈنگ اور بجلی کے ناقابل ادائیگی بل ادا کرنے پر مجبور ہیں اور وہ اس بجلی کا بل بھی ادا کرتے ہیں جو وہ استعمال نہیں کرتے۔ واپڈا کی ایک حالیہ رپورٹ کے مطابق وہ ایک سو ارب روپے کے بل اپنے صارفین سے اسی طرح وصول کرتے ہیں یہ کسانوں کی معیشت پر ایک بہت بڑا ڈاکہ ہے۔ واپڈا اپنی نااہلی اور کرپشن، بددیانتی چھپانے کے لیے یہ طریقہ کار اختیار کر رہا ہے، وطن عزیز میں اشرفیاں لوٹی جا رہی ہیں۔ ہماری آزاد اور خود مختار عدلیہ بے گناہ اور بے قصور کسانوں سے اووربلنگ کے حوالے سے کوئی بھی عملی قدم نہیں اٹھا رہی، ہمارے کسان کی معیشت روزبروز کمزور ہوتی جا رہی ہے۔ مظلوم کسان اب تک اپنے جانور، زیور اور گھر کی دیگر قیمتی اشیا فروخت کر کے بل ادا کر رہا ہے لیکن اب اس کی معاشی بدحالی کی وجہ سے اس میں بجلی کے اوور بل جمع کرانے کی سکت نہیں ہے۔ فیول ایڈجسٹمنٹ، الیکٹرسٹی ڈیوٹی اور دیگر نام نہاد چارجز فوری ختم کیے جائیں۔ کیا ہمارے حکمران کل پاکستان کی 80فیصد زراعت کرنے والے صوبہ پنجاب کے کسانوں کو بھی دیگر صوبوں کی طرح زرعی ٹیوب ویل کے لیے فلیٹ ریٹ پر بجلی مہیا نہیں کر سکتے کیا یہ کسانوں کا معاشی قتل عام کرنا چاہتے ہیں کیا ہمارے حکمران ملک میں خوراک کا مصنوعی بحران پید اکر کے بدامنی کا راج کرانا چاہتے ہیں۔ کسان بورڈ پاکستان حکومت سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ پنجاب بھر کے کاشت کاروں کو فوری طور پر بلوچستان کی طرز پر قابل ادائیگی فلیٹ ریٹ کے تحت بجلی فراہم کرے بصورت دیگر کاشت کار بجلی کا بل ادا کرنے کے قابل نہیں رہیں گے۔جب بل ادا نہیں ہوں گے تو واپڈا کنکشن کاٹے گا اور کسان انھیں ایسا نہیں کرنے دے گا اور پھر ایک طویل نا ختم ہونے والی جنگ شروع ہو جائے گی۔ اگر حکومت وقت نے ہماری بات پر عمل درآمد کیا تو حالات پرسکون رہیں گے بصورت دیگر حالات خراب ہونے کی تمام تر ذمہ داری حکمرانوں پر عائد ہو

یہ بھی پڑھیں  چٹاگانگ : ہالینڈ کا ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کرنے کا فیصلہ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker