پاکستانتازہ ترین

سینیٹ،انسداد دہشتگردی 1997ء میں مزید ترمیم کا بل کثرت رائےسےمنظور

islamabad-national-assembly-اسلام آباد(بیورو رپورٹ)سینیٹ نے انسداد دہشتگردی 1997ء میں مزید ترمیم کا بل انسداد دہشتگردی ترمیمی بل 2013ء کثرت رائے کی بناء پر منظور کرلیا،جمعیت علماء اسلام(ف) نے اس کی بل کی مخالفت کی تھی،منگل کے روز وفاقی وزیر قانون وانصاف فاروق ایچ نائیک نے ایوان میں انسداد دہشتگردی ایکٹ 1993ء میں مزید ترمیم کا بل’’انسداد دہشتگردی ترمیمی بل2013ء‘‘ پیش کیا،اپوزیشن کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا کہ اس بل کو فوری طور پر منظور نہ کیا جائے،اگر چہ قومی اسمبلی نے اسے منظور کر رکھا ہے،لیکن اس کو مزید بہتر بنایا جاسکتا ہے،جے یو آئی(ف) کے سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری نے اس بل کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ایسا ہی بل نواز شریف کے دور حکومت میں پیش کیا گیا تھا،جس کی وجہ سے دہشتگردی کم ہونے کی بجائے مزید کئی گنا بڑھ گئی تھی اور آج بھی ملک کو ایسے ہی حالات کا سامنا ہے،اس بل کی وجہ سے دہشتگردی کم ہونے کی بجائے مزید بڑھ جائے گی،انہوں نے مطالبہ کیا کہ بل پر رائے شماری کو مؤخر کردیا جائے تاکہ ارکان سینیٹ اس کو پڑھ سکیں،کیونکہ ارکان سینیٹ کو اس بل کی نقول فراہم نہیں کی گئی تھیں،تاہم فاروق ایچ نائیک نے زور دیا کہ اس بل کو آج ہی پاس کیا جائے گا،جس کے بعد چےئرمین سینیٹ نے رائے شماری کرائی اور بل کثرت رائے سے منظور ہوگیا۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button