تازہ ترینعلاقائی

پنجاب کےہرشہر میں احتجاجی کیمپ لگاؤں گا،شہباز شریف

لاہور (نمائندہ خصوصی) وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ پنجاب کے عوام کو غیر مساوی اور ظالمانہ لوڈشیڈنگ سے نجات دلانے کے لئے صوبہ کے ہر شہر میں احتجاجی کیمپ لگاؤں گا۔ مجھے رمضان المبارک کے آغاز سے پہلے وفاقی حکومت کی طرف سے پیغام دیا گیا تھا کہ حکومت نے پورے ملک میں ایک جیسی لوڈشیڈنگ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ لہذا مجھے اپنا ٹینٹ آفس ختم کر دینا چاہیے لیکن مجھے معلوم تھا کہ حکومت ہمیشہ کی طرح جھوٹ بول رہی ہے اور میری یہ بات سچ ثابت آج اوکاڑہ میں لوڈشیڈنگ کے خلاف قائم ٹینٹ آفس میں مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ وفاقی حکمرانوں کا ضمیر مردہ ہو چکا ہے اور انہیں اس امر کا کوئی احساس نہیں کہ پنجاب کے شہروں میں سولہ سولہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ نے لوگوں کے روزگار چھین لیے ہیں۔ ان کے چھوٹے چھوٹے کاروبار مکمل طور پر تباہ ہو چکے ہیں اور زراعت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ائیر کنڈیشنڈ کمروں میں بیٹھ کر لوڈشیڈنگ کے خلاف نعرے لگانے کی بجائے شدید ترین گرمی میں‘بجلی کے بغیر ‘عوام کے ساتھ بیٹھ کر ظالم حکمرانوں کے خلاف جنگ لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے جن شہروں میں لوڈشیڈنگ نہیں یا اس کا دورانیہ کم ہے ان کے شہریوں کو چاہیے کہ وہ پنجاب میں بسنے والے اپنے پاکستانی بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے منصفانہ لوڈشیڈنگ کے مطالبے کی حمایت کریں۔ اگر آج اس طرح کی امتیازی لوڈشیڈنگ کا سامنا کسی دوسرے صوبے کو ہوتا تو میں اس صوبے کے عوام کے ساتھ بھی کھڑا ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں بجلی چوری سب سے کم ہے اور واجبات کی ادائیگی کی شرح سب سے زیادہ ہے۔ لیکن لوڈشیڈنگ کا بدترین نشانہ بھی پنجاب کو ہی بنایا جارہا ہے۔ محمد شہباز شریف نے کہا کہ تھر کوئلے سے 4 ہزار میگا واٹ اور گنے کی پھوک سے 2 ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرکے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کیا جا سکتا ہے۔ وزیراعلی نے کہا کہ نندی پور اور چیچو کی ملیاں پاور پراجیکٹ وفاق کی مجرمانہ غفلت کی نذر ہو گئے۔انہوں نے کہا کہ ہم سب سے پہلے پاکستانی ہیں لیکن دوسرے صوبوں میں ہونے والی بجلی کی چوری اور عدم ادائیگی کے نقصان کو پنجاب سے پورا کرنے کا سلسلہ اب ختم ہونا چاہیے۔ بعدازاں انتظامی افسروںکے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی نے کہا کہ عوام کی خدمت سے جی چرانے والے افسروں کی صوبے میں کوئی جگہ نہیں۔ انہوں نے پولیس حکام کو ہدایت کی علاقے سے چوروں اور ڈاکوؤں کے قلع قمع کے لئے اپنی بہترین صلاحیتیں بروئے کار لائیں۔ انہوں نے کہا کہ جرائم پیشہ افراد کو مدد فراہم کرنے اورپناہ دینے والے افراد بھی انہیں کی طرح سزا کے مستحق ہیں۔وزیراعلی پنجاب میاں محمد شہباز شریف اوکاڑہ میں اغوا کے بعد قتل ہونے والی بارہ سالہ لڑکی کے گھر بھی گئے ۔ انہوں نے مقتولہ کے اہل خانہ سے اظہار تعزیت کیا اور متاثرہ خاندان کو 5 لاکھ روپے کا امدادی چیک دیا۔ وزیراعلی نے آئی جی پنجاب کو ہدایت کی متاثرہ خاندان کو فوری انصاف فراہم کیا جائے اور ملزمان کو جلد از جلد کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔#

یہ بھی پڑھیں  پھولنگر:ایس ڈی او لیسکو سب ڈویژن بھائی پھیرو سید تصدق حسین شاہ کوتبدیل کردیا گیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker