پاکستانتازہ ترین

شاہ زیب قتل کیس،آئی جی سندھ کہیں کہ وہ ناکام ہوچکےہیں ،سپریم کورٹ

shahzaibاسلام آباد (بیورو رپورٹ) شاہ زیب قتل ازخود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی ۔ کیس کی سماعت چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکی بینچ نے کی ۔ سماعت شروع ہوئی تو آئی جی سندھ فیاض لغاری نے کیس میں پیش رفت سے متعلق رپورٹ عدالت میں جمع کروا ئی۔ چیف جسٹس نے استفسار کرتے ہوئے کہا کہ شاہ زیب کے بارے میں رپورٹ پرانی ہے یا نئی ہے جس پر ایڈوکیٹ جنرل سندھ فتح ملک کا کہنا تھا کہ یہ نئی اطلاعات پر مشتمل 6جنوری کی رپورٹ ہے اور ہم کامیابی کے قریب ہیں ۔ چیف جسٹس کا کہنا تھاکہ آپ کو یہ بھی نہیں پتہ کہ شاہ رخ جتوئی کب اور کہاں گیا ،جسٹس گلزار نے کہا کہ شاہ رخ جتوئی کی دبئی اترنے کی اطلاعات ہیں ،شاہ رخ جتوئی نے اپنے نام سے سفر نہیں کیا۔ ڈی آئی جی ساوتھ حیات نے بیان جمع کراتے ہوئے کہا کہ شاہ رخ امارات کی پرواز سے جعلی نام سے گئے اور ان کو پکڑنے کے لئے ٹیم آج دبئی روانہ ہو گی ،امیگر یشن میں کسی اور کا بورڈنگ کارڈ استعمال ہو نے کا فراڈ ہو تا رہا ہے ۔ چیف جسٹس کے ریمارکس دیتے ہوئے کہنا تھا کہ شاہ زیب قتل کیس میں نئی ایف آئی آر درج کرکے کیس کو دبانے کی کوشش کی گئی ہے ،اتنے اہم واقعے کے بعد مرکزی ملزم بیرون ملک فرار ہوگیا،اطلاع کے مطابق شاہ رخ جتوئی کا دبئی سے باہر جانے کا کوئی اندراج نہیں ہے ،ہمارے سامنے بہت سے ایسے مقدمات ہیں جن میں ملزم فرار ہو گئے ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ پولیس بااثر افراد سے ڈرتی ہے، عزت اور ذلت صرف اللہ کے ہاتھ میں ہے صرف اسی سے ڈرو،پولیس نے گمراہ کیا کہ شاہ رخ جتوئی ملک سے باہر نہیں ہیں ،اللہ نے بطور آئی جی عزت دی اس کی حفاظت کریں۔ پولیس نے جان بوجھ کر شاہ رخ جتوئی کو بھاگنے کا موقع دیا ہے ۔ جسٹس شیخ عظمت سعید کا کہنا تھا کہ شاہ رخ جتوئی کا نام کب ای سی ایل میں ڈالنے کی درخواست دی گئی ، ڈی جی ساتھ شاہد حیات کا کہنا تھا کہ درخواست 27 دسمبر کو دی گئی اور نام 2 جنوری کو ای سی ایل میں آیا ۔جسٹس عظمت نے استفسار کرتے ہوئے کہا کہ درخواست تب بھجوائی جب شاہ رخ جتوئی کی کراچی سے نکل جانے کی تصدیق ہوگئی اوردرخواست صرف ایف آئی اے کراچی کو دی گئی ،پاسپورٹ منسوخی کی درخواست 4جنوری کو دی گئی تب اس کی اہمیت کوئی نہیں تھی ۔ڈی آئی جی کا کہنا تھا کہ مقدمے کے دوسرے ملزم سراج تالپور کا نام بھی ای سی ایل میں شامل کرلیا گیا ہے ۔ سپریم کور ٹ نے آئی جی سند ھ کو مخا طب کر تے ہوئے کہا کہ کیا آپ نے 15سے شاہ زیب قتل کے حوالے سے پوچھا جبکہ قتل کے 45 منٹ بعد پولیس موقع واردات پر پہنچی تاہم آئی جی کہیں کہ ان کا ضمیر معلا مت کر رہا ہے اور وہ ناکامی کو قبول کریں۔

یہ بھی پڑھیں  بیرون ملک سے مداری آتے ہیں اور ملک میں سرکس لگاتے ہیں،نواز شریف

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker