علاقائی

پھولنگر:منشیات فروشی کاجھوٹھا مقدمہ درج نہ کرنے پرایس ایچ اواور اےایس آئی سے گھتم گتھا

بھائی پھیرو﴿نامہ نگار﴾منشیات فروشی کاجھوٹھا مقدمہ درج نہ کرنے پر ایس ایچ او تھانہ سٹی بھائی پھیرو اپنے ماتحت اے ایس آئی سے گھتم گتھا ۔قانون کے محافظوں کی لڑائی سے شہری،حوالاتی اور شیر جوان محظوظ ہوتے رہے۔ فخش گالیاں دے کر کمرے میں بند کر کے گھونسوں اور مکوں سے پٹائی ۔ بے ہوش ہونے پر اے ایس آئی کو کمرے میں بند کر دیا ۔بے عزتی پر اے ایس آ ئی نے خود کشی کی دھمکی دے دی ۔ تفصیلات کے مطابق پولیس کی سرپرستی میں بھائی پھیرو میں چلنے والے منشیات فروشی کے اڈوں کی خبر شائی ہونے پر اعلی پولیس حکام نے مقامی پولیس کو منشیات فروشی کے خلاف ایکشن لینے کا حکم دیا۔جس پر تھانہ سٹی کے ایس ایچ او ن سردار امجد ڈوگرنے اعلی پولیس افسران کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کی خاطر انوکھا طریقہ ایجاد کر لیا اور اپنے ماتحت نہ سٹی اے ایس آ ئی وارث کو منشیات کا جھوٹا مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا ۔فرض شناس اور رحم دل اے ایس آئی کے انکار پرسفاک ایس ایچ او سیخ پا ہو گیا اور پبلک اور ما تحت ملازمین کے سامنے اے ایس آئی کو فخش گالیاں اور نوکری سے نکال دینے کی دھمکیاں دینی شروع کر دیں اور اے ایس آ ئی کو دھکے دے کر کمرے میں لے جا کر اُس پر لاتوں اور مکوں کی بارش کر دی ۔عمر رسیدہ اے ایس آ ئی بے ہوش کر گر پڑا توما تحت ملازمین نے بڑی مشکل سے تھانے دار کی منت سماجت کر کے اسکی جان چھڑوائی ۔ سرداری اور تھانیداری کے نشہ میں دھت ایس ایچ او کو پھر بھی بے ہترس نہ آیا تو اس نے اپنے ماتحت اے ایس آئی کو بے ہوش حالت میں ایک کمرے میں بند کر دیا ۔کافی دیر بعد ہوش آ نے پر اے ایس آ ئی نے اپنے اہل خانہ کو فون کر کے دھمکی دی کہ وہ اپنی بے عزتی بر داشت نہیں کر سکتا اور اس لئے نہر میں کود کر خود کشی کر لے گا ۔ ااے ایس آئی کے اہل خانہ نے سارا واقعہ فوری طورپر اعلیٰ پولیس حکام کو بتایا جنہوں نے فوری طور پر پولیس کی ایک ٹیم کو تھانہ سٹی بھائی پھیرو میں تحقیقات کے لئے بھیجا ۔ ٹیم کے آ نے پر اے ایس آ ئی بچوں کی طرح بلک بلک کر پھوٹ پھوٹ کر رونے لگا اور کہا کہ وہ اب وہ اس تھانہ میں نوکری نہیں کر سکتا ۔موقع پر موجود شہریوں نے ایس ایچ او کی غنڈہ گردی پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو قانوں کی مخافظ پولیس خود غنڈہ گردی پر اُتر آ ئیاور بے گناہ شہریوںکو جھوٹے مقدمات میں پھنسا کر اپنے افسران کو بے وقوف بنائے ایسے پولیس افسرکو نوکری سے بر خاست کر دینا چاہیے ۔ لوگوں نے کہا کہ مذکورہ پولیس افسر کا اپنے ما تحت ملازمین اور عوام سے رویہ نہایت گستاخانہ ہے اور تحکمانہ ہے جس کی وجہ سے تھانہ میں مظلوم لوگ فریاد کرنے کیلیے آنے سے ڈرتے ہیں ۔جبکہ دوسری طرف مذکورہ ایس ایچ او کے کمرے میں ہر وقت منشیات فروشوں ، جوئے بازوں اور رشوت خوروں کا جمگھٹا لگا رہتا ہے ۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker