پاکستانتازہ ترین

گیاری سیکٹر:کھدائی کےلئےدھماکہ خیزمواد کااستعمال شروع

راولپنڈی﴿نمائندہ خصوصی﴾   سیاچن کے دفاعی  محاذ  پر گیاری  سیکٹر میں برفانی تودہ  گرنے  والے مقام پر برف کی مزید سلائیڈنگ ہونے سے سخت موسمی حالات میں امدادی کارروائیوں میں مصروف فوجیوں کی مشکلات میں اضافہ ہوا ہے ، ریسکیو آپریشن میں کھدائی کیلئے دھماکہ خیز مواد کا استعمال بھی شروع کردیا گیا ہے . آئی ایس پی آر کے مطابق گیاری سیکٹر میں تودہ گرنے والے مقام پر مزید سلائیڈنگ سے ریسکیو آپریشن میں مشکلات درپیش آرہی ہیں ، موسم کی سختی اور شدید مشکل حالات کے باوجود ، ریسکیو میں مصروف جوانوں کے حوصلے بلند ہیں اور وہ اپنا کام دن رات جاں فشانی سے کررہے ہیں ،اس عمل میں تمام حاصل انسانی اور مشینی وسائل کا بھرپور استعمال کیا جارہا ہے، تودہ گرنے والے مقام پر تلاش کی گئی نئی جگہ پر کھدائی کا سلسلہ بھی جاری ہے، تودے تلے دبے ایک اہم مقام تک پہنچنے کیلئے سخت ملبے میں پہلی بار دھماکہ بھی کیا گیا تاکہ کھدائی کا عمل آسان ہوسکے، مطلوبہ مقام تک پہنچنے کیلئے سرنگ کی کھدائی بھی جاری ہے جبکہ دیگر مقامات پر ایکسکویٹرز کے ذریعے کھدائی بھی مسلسل جاری ہے  پہلے مقام پر 115فٹ گہرائی تک کھدائی  کے بعد رہائشی مقام تک رسائی  کیلئے 130 فٹ لمبی  اور تین میٹر قطر کی سرنگ پر کام شروع ہوچکاہے  اور دوسرے مقام پر100 فٹ تک کھدائی کی جاچکی ہے  اس کے علاوہ 450 میٹر طویل رسائی کا ٹریک تیار کرکے ترجیحی مقامات پر پہنچنے کیلئے برفانی تودے پر سازوسامان لے جانے کے راستے کو بہتر بنایا جا چکاہے  چین اور ناروے  سے ماہرین کی ٹیمیں جلد گیاری پہنچ جائیں گی تھرمل امیجنگ  آلات ، سٹیم کیمروں، لائف ڈیٹکنگ کٹس اور حساس نوعیت کے ریڈارز سمیت جدید آلات کی مدد سے ریکسیو آپریشن کو مزید وسعت دینے میں مدددینگے ۔

یہ بھی پڑھیں  سیالکوٹ:عوام کو ریلیف دینے پر کوئی کمی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی،ٹی ایم اے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker