تازہ ترینعلاقائی

گجرات یونیورسٹی کی انتظامیہ ذاتی مفادات کے لئے 125سالہ قدیم گورنمنٹ مرے کالج سیالکوٹ کو ٹارگٹ کررہی ہے، متاثرہ ہزاروں طلباء وطالبات

Govt. Murray College Sialkotسیالکوٹ (سعید پاشا) شہر اقبال میں اپنے فرینچائز کیمپس کو چلا نے کے لئے یونیورسٹی آف گجرات نے شاعر مشرق علامہ محمد اقبال اور فیض احمد فیض کے مادرِ علمی گورنمنٹ مرے کالج سیالکوٹ میں وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف کے بی ایس پروگرام کے تحت 14مضامین میں سے آٹھ مضامین کے داخلے بند کر دئیے ہیں۔جس کی وجہ سے مرے کالج کے ہزاروں طلباء و طالبات کا تعلیمی مستقبل داؤ پر لگ گیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ یونیورسٹی آف گجرات نے آٹھ مضامین،بی بی اے،آئی ٹی،باٹنی،کیمسٹری،زوالوجی،میتھس،فزکس،سٹیٹس، مرے کالج سیالکوٹ کو ان مضامین میں داخلے جاری رکھنے کا حکم دے دیا۔جس پر یہاں دو ہزار سے زائد طلباء وطالبات کے داخلے کر لئے گئے ہیں مگر گجرات یونیورسٹی کی طرف سے مسلسل ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے۔یونیورسٹی انتظامیہ ان داخلوں کو تسلیم نہیں کر رہی اور مرے کالج سیالکوٹ میں فیکلٹی اور انفرا سٹرکچر کی کمی کا بہانہ بنا کر مرے کالج انتظامیہ کو مذکورہ آٹھ مضامین میں بی ایس کلاسز کے لئے داخلے دینے سے منع کر دیا ہے۔ہزاروں متاثرہ طلباء و طالبات اور اُن کے والدین کا کہنا ہے کہ گجرات یونیورسٹی کی انتظامیہ ذاتی مفادات کے لئے 125سالہ قدیم گورنمنٹ مرے کالج سیالکوٹ کو ٹارگٹ کررہی ہے اور مرے کالج سیالکوٹ کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک برتا جا رہا ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کے بی ایس پروگرام کے تحت معیاری تعلیم کے فروغ کی بجائے مرے کالج سیالکوٹ میں تعلیم کا گلہ گھونٹ رہی ہے۔بقول اقبال گلہ تو گھونٹ دیا اہل مدرسہ نے تیرا، کہاں سے آئے صدا لا الٰہ الا اللہ؟ . علامہ اقبال کے مادرِعلمی گورنمنٹ مرے کالج سیالکوٹ میں چارسال قبل وزیرعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کے حکم پر 14مضامین میں 4سالہ بی ایس پروگرام شروع کیا گیا تھا۔حالانکہ اُس وقت کالج کے پاس اساتذہ اور انفرا سٹرکچر کی کمی تھی۔ اس ضمن میں پرنسپل گورنمنٹ مرے کالج سیالکوٹ پروفیسر جاوید اخترباللہ نے کہا کہ اب مرے کالج سیالکوٹ میں یہ بی ایس پروگرام کامیابی سے چل رہا ہے تو گجرات یونیورسٹی نے کالج میں سٹاف کی کمی اور انفرا سٹرکچرکا بہانہ بنا کرکے آٹھ مضامین میں داخلے بند کر دئیے ہیں۔جبکہ سیشن 2013میں مرے کالج کی انتظامیہ نے سیکرٹری محکمہ ہائر ایجوکیشن پنجاب کے حکم پر ان ِ ممنوعہ آٹھ مضامین میں 2000طلباء و طالبات کے داخلے مکمل کئے ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ اُس وقت ضلع سیالکوٹ میں صرف گورنمنٹ مرے کالج سیالکوٹ ہی سب سے سستی بی ایس کی تعلیم دے رہا تھا۔ متاثرہ ہزاروں طلباء وطالبات اور اُن کے والدین نے اس صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور اور وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے فوری نوٹس لینے کی پر زور اپیل کی ہے کہ 2ہزار طلباء و طالبات کا تعلیمی مستقبل محفوظ ہو سکے۔واضح رہے کہ یونیورسٹی آف گجرات نے مرے کالج سیالکوٹ میں باقی ماندہ بی ایس 6مضامین میں داخلے کے حصول کے لئے این ٹی ایس ٹیسٹ کو لازمی قرار دے دیا ہے جبکہ گجرات یونیورسٹی کے سیالکوٹ فرینچائز کیمپس میں بی ایس کلا سز میں داخلہ کے لئے این ٹی ایس ٹیسٹ کی کوئی پابندی نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button