کھیل

SQAYکشمیر کا قومی کھیل ہے جس کی اپنی ایک جداگانہ حثیت ہے

(حاصل پور ( بیورو رپورٹ
پنجاب SQAY ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری طارق جاوید علی اور پاکستان SQAY فیڈریشن کے جوائنٹ سیکرٹری نے پریس ریلز کرتے ہوئے بتایا کہ SQAY ایک نیو مارشل آرٹس ہے جس کی اپنی ایک جداگانہ حثیت ہے۔ SQAY کا ورلڈ ہیڈ کواٹر جموںکشمیر ﴿بھارت﴾ میں ہے SQAY فارسی کا لفظ ہے جس کے معنی، جنگ کا علم، ہزاروں سال پہلے کشمیر کا بادشاہDHARYADEV اپنے جنگجو وں کو اس دفاعی مارشل آرٹس کی تربیت دیتا تھا، SQAY کی جدید شکل کو گرینڈ ماسٹر نذیر احمد میر نے کشمیر میں دوبارہ شروع کیا۔ یہ اب ایک سپورٹس ہے۔ اور تقریباً پوری دنیا میں دوسرے مارشل آرٹس کی طرح تیز ی سے SQAY ترقی کر رہاہے۔ SQAY کشمیر کا قومی کھیل ہے جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے1819 ئ سے 1325 ئ سے کشمیری فوجیوں کے لازمی تھا اور یہ مارشل آرٹس کشمیری "Shamsherizen” کے طور پر مشہور تھے 1819ئ میں حکومت کی عدم توجہ کی بدولت یہ مارشل آرٹس ختم ہو گا۔ گرینڈ ماسٹر نذیر احمد میر نے 1987 ئ سے اس مارشل آرٹس کے مقابلہ جات کروا کر پوری دنیا کو حیران کر دیا اور اس سلسلے میں بہت محنت ہو رہی ہے تاکہ کم وقت میں SQAY مارشل آرٹس دوسرے مارشل آرٹس کی طرح مقبولیت حا صل کر لیں ۔ پاکستان میں اس کو متعارف کروانے میں شہباز احمد خان سرفرست ہے۔ جو کہ پاکستان SQAY فیڈریشن کے جنرل سیکرٹری ہے۔ پاکستان میں SQAY مارشل آرٹس تیزی سے ترقی کر رہا ہے اور طارق جاوید علی جو کہ ان کے اس مشن میں ان کے ساتھ ہیں جو کہ بیک وقت پاکستان میں سپورٹس اور میڈیا کی ترقی کے لئے کام کر رہے ہیں
جو کہ میڈیا کونسل آف پاکستان کے بانی اور جنرل سیکرٹری ہے اور سپورٹس جرنلسٹ ایسوسی ایشن کے بھی بانی اور سیکرٹری جنرل ہے۔ اور بیک وقت میڈیا میں بیوروچیف پاکستان کے عہدے پر کام کر ر ہے ہیں جن میں روزنامہ کسک نیوز ڈی جی خان۔ روزنامہ کرائم انفار میشن ڈیٹ ملتان۔ پاک نیوز لائیو اون لائن نیوز پیپر۔ ورلڈ نیو الجنسی خبر رساں ادارہ۔ گلوبل نیوز نیٹ ورک خبر رساں ادارہ میں کام کر رہے ہیں ۔ اور 1 جون سے 7 جون 2012 پہلگام کشمیر میں انٹرنیشنل SQAY ماسٹر کپ اور 31 مئی و 7 جون 2012 سے انسٹرکٹر اور ریفرنگ کیمپ بھی منعقد ہو رہا ہے اور اس کے ساتھ انقریباً دوسری SQAY ورلڈ چیمپن کا اعلان کیا جائے گا

یہ بھی پڑھیں  ومبلڈن: اعصام کی مکسڈ ڈبلز کے سیمی فائنل میں رسائی

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker