انور عباس انورتازہ ترینکالم

جنرل اشفاق پرویز کیانی تجھے سلام

اتنے دنوں کی غیر حاضری کے بعد لکھنے بیٹھا تو سوچ میں پڑ گیا ہوں کہ کس موضوع پر طبع آزمائی کروں۔کیونکہ عالمی اور ملکی سطح پر اتنے اہم موضوعات اس قدر سامنے ہیں .کہ فیصلہ کرنا مشکل ہو رہا ہے. پاکستان میں ڈی ایٹ ممالک کی کانفرنس کا انعقاد اپنی اہمیت رکھتا ہے.اس کانفرنس کی کامیابی پر قائد حزب اختلاف چودہری نثار علی خان کا تبصرہ کہ’’کانفرنس ناکا م رہی ہے‘ ‘ بھی تبصرے کا تقاضہ کرتا ہے. جبکہ برادرملک جمہوری اسلامی ایران کے صدر محترم احمدی نژاد کا فرمان ہے کہ ’’ ڈی ایٹ ممالک کی کانفرنس نہایت کامیاب رہی ہے‘‘سچ رہا ہوں کہ اپنے قائدحزب اختلاف کی بات میں وزن ہے یا ایران کے صدر کا فرمان زیادہ قابل غور و فکر کے ساتھ ساتھ زیادہ اہمیت کا حامل ہے…….وزیر داخلہ رحمان ملک کے تمام تر دعووں کے باوجود کراچی.راولپنڈی سمیت ملک کے دیگر شہروں میں بم دہماکوں نے حکومتی دعووں کا پول کھول کے رکھ دیا۔۔۔ریاست عوام کی جان و مال کی حفاظت کی ذمہ داری اور فرائض کی انجام دہی میں معذور رہی ہے.دہشت گردوں کی اس کامیابی پر بھی داد دینے کے لیے لکھنے کا ارادہ تھا .اس کے علاوہ اپنے پیارے سیاستدانوں کے شب وروز کے اعمال و بیانات ۔۔۔لیکن کافی سوچ بچار کے بعد میں اس نتیجے پر پہنچا ہوں کہ ان سب موضوعات پھر طبع آزمائی کروں گا آج آرمی چیف اشفاق پرویز کیانی کے اس بیان کا جائزہ لیا جائے جو انہوں نے ڈی ایٹ ممالک کی کانفرنس کے موقعہ پر میڈیاکو دیا ہے.جس میں آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی نے یہ کہہ کر’’ کراچی میں فوجی آپریشن کی ضرورت نہیں ہے ۔رینجرز درست کام کر رہے ہیں۔ کراچی کو فوج کے حوالے کرنے کے مطالبے سے ہوا نکال دیاور پھر جس کے بعدان سب کی امیدوں پر اوس پڑ گئی اور ان کے دلوں کے ارمان دل میں ہی رہ گے.جوعناصر

یہ بھی پڑھیں  ٹیکسلا:ترنول پریس کلب کے اتخابات ،محمد اسحاق عباسی صدر، وسیم الرحمان بھٹی جنرل سیکرٹری منتخب

قبل ازیں دن اور رات بس ایک ہی راگ الاپے جا رہی تھے. کہ کراچی کو فوج کے حوالے کیا جائے اور کراچی میں فوجی آپریشن کیا جائے۔یہ وہ عناصر ہیں جو فوجی آمروں کی تو گود میں خوشی و مسرت سے برسوں بیٹھے رہتے ہیں ۔مگر جب ملک میں جمہوریت آتی ہے۔ چاہے وہ لولی لنگڑی ہی کیوں نہ ہو ان کے پیٹ میں مروڑ اٹھنے لگتے ہیں۔یہ جمہوریت ان سے براداشت نہیں ہوتی .انہیں عوام کے بنیادی حقوق یاد آنے لگتے ہیں ۔عوام کی منتخب حکومت میں ہزاروں کیڑے دکھائی دینے لگتے ہیں۔منتخب عوامی حکومت اپنے قیام کے تین مہینے بعد ہی ناکا دکھائی دینے لگتی ہے.یہ عناصر کون ہیں ؟ کسی سے پوشیدہ نہیں ہیں .یہ وہیں ہیں جو جمہوریت کے خلاف بننے والے سازشی اتحادوں میں جلوہ گر رہے ہیں اور اسکی اگلی سفوں میں رونق افروز رہے ہیں …جو آج بھی مختلف قائم سازشی اتحادوں کے ٹرکوں پر چڑھے نظر آتے ہیں.انہیں عوام سے رتی بھر محبت ہے اور نہ ہی جمہوریت سے الفت ہے انہیں تو بس اپنے ان مفادات سے غرض سے جو صرف اور صرف آمریت کے دور میں ہی حاصل ہو سکتے ہیں.یہ عناصر بات تو اٹھارہ کروڑ عوام کے حقوق کی کرتے ہیں مگر انتخابات میں عوام ان کی ضمانتیں ضبط کروا دیتے ہیں. کراچی میں فوج کو طلب کرنے کے مطالبے کرنے والے ہیجڑوں کو چاہئے کہ پہلے وہ آئی ایس آئی سے لی گئی رقومات کا اعتراف تو کریں تم سے تو بازی تو بی بی عابدہ حسین لے گئی ہے وہ بھی ایک صنف نازک ہو کر .تم پھر خود کو مرد کہلواتے ہو
ان کی کوشش ہوتی ہے کہ عوامی حکومت کے اقتدار سنبھالنے کے چھ ماہ بعد ہی چلتا کیا جائے۔ان عناصر نے جمہوریت کی بساط لپیٹنے کے لیے ہمیشہ جی ایچ کیو کی جانب نظریں مرکوز رکھی ہیں۔لیکن جہاں دیدہ اور ملکی و بین الااقوامی حالات کا بہتر ادراک رکھنے والے آرمی چیف نے مندرجہ بالا بیان دیکر جمہوریت کے بہی خواہوں کے ارمان خاک میں ملا دئیے ہیں۔آرمی چیف نے بڑے کھلے انداز میں ان عناصر پر واضع کر دیا ہے کہ ’’ محرم میں امن و امان اور دہشت گردی کنٹرول کرنے کے لیے فوجی دستے تیار ہیں‘‘ آئی ایس پی آر کے مطابق ’’سندھ میں حکومت کسی وقت بھی فوج طلب کر سکتی ہے ‘‘آرمی چیف جنرل اشصاق پرویز کیانی کے بیان کی جس قدر بھی ستائش و تو صیف کی جائے وہ کم ہے۔اگر جنرل اشفاق پرویز کیانی کے اندر بھی جنرل ایوب خانِ جنرل یحیی خان ِ جنرل ضیا الحق اور جنرل پرویز مشرف کی طرح اقتدار کی ہوس کے شعلے بھڑ رہے ہوتے توانہوں نے اب سے بہت دیر قبل اقتدار پر قبضہ کر لیا ہوتا.گو کہ فوج کے کچھ عناصر نے ان ساڑھے چار سالوں میں حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش ضرور کیں لیکن ارباب اقتدار کی دانشمندی کے باعث یہ ناکامی سے دوچار ہوئیں.میں متعدد بار کہہ چکا ہوں کہ سیاستداسن سیاسی معاملات میں پاک افواج کو مت گھسیٹیں اور اپنے کام خود سرانجام دیں تو ملک .قوم اور ہم سب کے بہترین مفاد میں ہوگا.کراچی جیسے شہر میں افواج کو پھنسانا کسی طرح بھی دانشمندی نہیں کہلائے گی.جنرل اشفاق پرویز کیانی کا ساتھ دیں اور ملکر نعرہ لگائیں…..جنرل اشفاق پرویز کیانی زندہ باد…افواج پاکستان زندہ باد…… جمہوریت زندہ باد…..پاکستان پایندہ باد

یہ بھی پڑھیں  عبدالعلیم خان826 ووٹ لے کرتحریک انصاف لاہور کے صدر منتخب

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker