پاکستانتازہ ترین

حکومت کا گنے کے پھوک سے 3000 میگاواٹ سستی بجلی پیدا کرنے کا منصوبہ

sugarاسلام آباد (بیورو رپورٹ) پانی و بجلی کے وفاقی وزیر چوہدری احمد مختار نے کہا ہے کہ حکومت گنے کے پھوک سے تین ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کیلئے شوگر ملز کو ہر ممکن تعاون فراہم کرے گی او ر اس سلسلہ میں پالیسی میں ضروری ترامیم بھی کی جائیں گی انہوں نے کہا کہ حکومت ملک میں بجلی کے بحران کے خاتمے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لارہی ہے انہوں نے کہا کہ حکومت کی کوشش ہے کہ پندرہ سو میگاواٹ بجلی گنے کے پھوک سے پیدا کرکے جلد از جلد نیشنل گرڈ میں شامل کردی جائے انہوں نے یہ بات گزشتہ روز یہاں گنے کے پھوک سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے کے حوالے سے منعقدہ ایک اجلاس میں کہی۔ پاکستان شوگر ملز ایسوسی ایشن کے وفد نے اجلاس کوبتایا کہ ملک میں اس وقت 87 سے زائد شوگر ملز ہیں جن میں سے تین ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت ہے انہوں نے بتایا کہ اس سے نہ صرف فرنس آئل کی درآمد میں کمی ہوگی بلکہ 33 ارب سے لے کر 49 ارب تک زرمبادلہ کی بچت بھی ہوگی انہوں نے کہا کہ اس کیلئے مشینری مقامی سطح پر تیار ہورہی ہے ایک منصوبہ مکمل ہونے میں ایک سال کا قلیل عرصہ درکار ہے انہوں نے یہ بھی بتایا کہ گنے کے پھوک سے بجلی کی پیداوار سردیوں میں حاصل ہوگی جب پن بجلی کی پیداوار کم ہوتی ہے اجلاس میں اس سلسلہ میں پالیسی ڈرافٹ پر غور کیا اور اس کو مزید آسان بنانے کیلئے اس میں ترامیم تجویز کی ہیں پالیسی کی سفارشات کیلئے کمیٹی قائم کی گئی ہے جو آئندہ ہفتے اپنی رپورٹ پیش کرے گی گنے کے پھوک سے بجلی پیدا کرنے کیلئے متبادل توانائی بورڈ سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کرے گا۔

یہ بھی پڑھیں  یو ٹیلٹی سٹور رمضان میں چینی 45روپے کلو فروخت کرینگے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker