پاکستانتازہ ترین

اسپیکر رولنگ کیس میں مختصرفیصلہ 3بجے سنایا جائے گا

اسلام آباد(بیوروچیف)  اسپیکر رولنگ کیس میں سماعت مکمل ہو چکی ہے اور عدالت کیس کا مختصر فیصلہ 3بجے سنائے گی۔ آج چیف جسٹس افتخارمحمدچودھری نے ریمارکس دئے ہیں کہ سزا معطل ہو سکتی تھی مگر اپیل نہیں کی گئی، اپیلیٹ کورٹ کے علاوہ کوئی عدالتی فیصلہ ختم نہیں کرسکتا۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دئے کہ آئین سب سے مقدم ہے ، کوئی نہیں جانتاکہ وہ آج ہے، کل نہ ہو، وزیراعظم بھی آج ہیں ، شایدکل نہ ہوں۔ چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ اسپیکر رولنگ کیس کی سماعت کر رہاتھا۔ دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دئے کہ کیا اسپیکر سات رکنی بنچ کے فیصلے کی اسکروٹنی کریں گی ،اس بات کی اجازت دے دی گئی تو عدلیہ کی آزادی کہاں ہو گی۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دئے کہ سات ججز نے طے کر دیا کہ وزیراعظم سزا یافتہ ہے، اپیل بھی نہیں کی گئی ،نوٹی فی کیشن تو عدالت نے نہیں کرنا۔ اٹارنی جنرل عرفان قادرنے دلائل میں کہاکہ عدالت اسپیکر کے خلاف کوئی فیصلہ سنا دے تو پارلیمنٹ اسے ختم کرسکتی ہے۔ اٹارنی جنرل نے یہ بھی کہاکہ سات ججوں کو وزیراعظم کو شک کا فائدہ دینا چاہیے لیکن انہیں سزا دے دی گئی۔ اٹارنی جنرل نے دلائل مکمل کئے تو چیف جسٹس افتخار محمد چودھری نے درخواست گزار کے وکیل اے کے ڈوگر کو دلائل دینے کا کہا اور استفسار کیا کہ اعتراز احسن کا اعتراض ہے کہ درخواست گزاروں کا بنیادی حق متاثر نہیں ہوا ،اس پر ان کا کیا موقف ہے۔ جسٹس خلجی عارف نے پوچھا کہ کوئی فرد غلط یا صحیح طور پر رکن اسمبلی رہتا ہے تو آپ کا کونسا حق متاثر ہوتا ہے، اس پر اے کے ڈوگر نے کہا کہ انصاف کی فراہمی کے لئے آزاد عدلیہ ہر شہری کا حق ہے اور ان کا یہ حق متاثر ہوا ہے۔ جسٹس جواد ایس خواجہ نے ریمارکس دئے کہ ہر بنیادی حق کا نفاذ انتظامیہ کی ذمہ داری ہے۔ آئین کہتا ہے کہ ججز یہاں بیٹھیں اور وزیراعظم وہاں، ہم سب عوام کے تنخواہ دار ہیں۔ اس پر اے کے ڈوگر نے کہا کہ عوام اس وقت بھوکے مر رہے ہیں۔ عمران خان کے وکیل حامدخان نے دلائل میں کہاکہ وہ چاہتے ہیں کہ الیکشن کمیشن یوسف رضا گیلانی کی بطور رکن قومی اسمبلی معطلی کا نوٹی فی کیشن کرے۔چیف جسٹس نے ان سے استفسارکیاکہ کیا آئین میں 63 ون جی کے تحت ہونے والی نااہلی پر اپیل کا حق دیا گیا ہے۔اس پرحامدخان کاکہناتھاکہ جی نہیں۔ حامدخان نے دلائل میں کہاکہ وزیراعظم کو آرٹیکل 248 کے تحت جائز اقدام پر استثناء ہو گا،عدالتی حکم کی خلاف ورزی پر کوئی استثناء نہیں ہوتا۔ اسپیکررولنگ کیس کی سماعت مکمل کرلی گئی ہے۔ عدالت آج دوپہرتین بجے مختصرفیصلہ سنائے گی

یہ بھی پڑھیں  پاکستان کی کیویز کیخلاف 6 وکٹوں سے جیت، سیریز برابر

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker