پاکستانتازہ ترین

وزیراعظم راجہ پرویزاشرف کوتوہین عدالت کا نوٹس جاری

سپریم کورٹ نے این آر او عمل در آمد کیس میں وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے 27 اگست کو عدالت میں طلب کرلیا ہے۔ این آر او عمل در آمد کیس کی سماعت جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں پانچ رکنی بنچ نے کی۔ عدالت نے سوئس حکام کو خط لکھنے سے متعلق جواب داخل نہ کروانے پر وزیر اعظم کو آئین کے آرٹیکل دو سو چارکے تحت توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا اور انھیں ستائس اگست کو ذاتی طور پیش ہونے کا حکم دیا۔ مختصر حکم نامے میں عدالت نے کہا کہ ستائس اگست تک عمل درآمد نہ ہوا تو توہین عدالت کی کارروائی کی جائے گی۔ این آر او فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے پر سابق وزیر اعظم کو عہدے سے ہٹنا پڑا۔ اٹارنی جنرل نے وقت مانگا تھا لیکن ابھی تک وزیر اعظم کا کوئی موقف بیان نہیں کیا۔ اس سے پہلے اٹارنی جنرل نے سماعت عید کے بعد تک ملتوی کرنے کی استدعا کی جو عدالت نے مسترد کردی ۔ اٹارنی جنرل کا کہنا تھا این آر او کا فیصلہ نا قابل عمل ہے۔ وہ مقدمات میں مصروف رہے نظر ثانی کی درخواست دائر کرنے کا وقت نہیں ملا۔ اب کام شروع کردیا ہے۔ وقت دیا جائے معاملہ حل کرنے کی ہر ممکن کرونگا۔ نئے وزیر اعظم کوغیر جاندارانہ مشورہ دونگا۔ جس پر جسٹس کھوسہ کا کہنا تھا ابھی تک تو کچھ نہیں کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں  کلبھوشن کا کیس عالمی عدالت کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا، پاکستان کے دلائل

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker