پاکستانتازہ ترین

غیر قانونی ترقیاں:سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ کرلیا‘ آئندہ ہفتے سنائے جانے کا امکان

supreem courtاسلام آباد(بیورو رپورٹ) سپریم کورٹ نے غیرقانونی ترقیوں کیخلاف اوریا مقبول جان کی درخواست پر فریقین کے دلائل کی سماعت کرنے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا۔ تین رکنی بینچ کے سربراہ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے ریمارکس دئیے کہ ترقیاں ضابطے کے مطابق ہوئی ہیں یا نہیں اس کا جائزہ لیں گے جبکہ جسٹس عظمت سعید شیخ نے ریمارکس دئیے کہ ایسا لگتا ہے کہ کچھ لوگوں کو ترقیاں ریٹائرمنٹ سے بچانے کیلئے دی گئیں۔ کسی کو ترقی دینے کیلئے قانون کی خلاف ورزی نہیں کی جاسکتی۔ انہوں نے یہ ریمارکس گذشتہ روز دئیے۔ عدالت نے دوران سماعت ترقیوں سے متعلق سلیکشن بورڈ کے اجلاس کی کارروائی اور سمری بھی طلب کی۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ سلیکشن بورڈ کا کافی عرصے سے اجلاس نہیں ہوا‘ حکومت ترقیوں سے متعلق دوسری رپورٹ تیار کررہی ہے جس کا انتظار کیا جائے مگر عدالت نے کہا کہ سلیکشن بورڈ کے اجلاس کا نہ ہونا بھی ترقیوں کے معاملے کو کسی حد تک بادی النظر میں شک میں مبتلاء کررہا ہے۔ دوران سماعت درخواست گزار کا کہنا تھا کہ 86 افراد کو ترقی دیتے وقت کسی قسم کے کوئی قانون اور قواعد و ضوابط کو مدنظر نہیں رکھا گیا جبکہ اب حکومت خود تسلیم کرررہی ہے کہ سلیکشن بورڈ کا بڑے عرصے سے اجلاس ہی نہیں ہوا۔ عدالت نے فریقین کے دلائل کی سماعت کرنے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا جوکہ آئندہ ہفتے سنائے جانے کا امکان ہے۔

یہ بھی پڑھیں  جسٹس دوست محمد نے سپریم کورٹ کے جج کی حیثیت سے حلف اٹھا لیا

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker