پاکستانتازہ ترین

صدرکی آئینی مدت کے خاتمہ کے بعد بیرون ملک ممکنہ روانگی‘ سپریم کورٹ میں درخواست دائر

supreem courtاسلام آباد (بیورو رپورٹ) آئینی مدت کے خاتمے پر صدر آصف علی زرداری کی پاکستان سے ممکنہ بیرون ملک روانگی کے حوالہ سے سپریم کورٹ میں درخواست کردی گئی ایک ضمنی درخواست میں عدالت سے کہا گیا کہ ان کی روانگی کی وجوہات این آر او کیس میں عدالتی فیصلہ سے دیکھی جاسکتی ہیں گزشتہ روز عدالت کو بتایا گیا کہ صدر مملکت نے ایبٹ آباد واقعے سے قبل حملے کے بارے میں ملنے والی اطلاع کو افواج پاکستان سے پوشیدہ رکھا لیکن عدالت کے دفتر نے درخواست پر اعتراض لگا دیا نئی درخواست میں کہا گیا کہ عدالتی حکام قومی سلامتی سے متعلق اہم معلومات کو عدالت کے رو برو لانے سے گریزاں دکھائی دیتے ہیں جبکہ آئین اس معاملے میں لاپرواہی کی اجازت نہیں دیتا نئی درخواست میں کہا گیا کہ میمو کیس کے بعض درخواست گزار بشمول وزیراعظم میاں نواز شریف اب وفاقی کابینہ کے رکن ہیں اور وہ وفاق کے خلاف مدعی نہیں رہے لہذا سابق سفیر حسین حقانی سے ایوان صدر میں کی جانے والی انکوائری کے بارے میں آئینی درخواست کی سماعت کیلئے علیحدہ بنچ تشکیل دیاجائے کیونکہ درخواست گزار اپنی پٹیشن کو ن لیگ کی درخواستوں کے ساتھ نتھی کرنے کا خواہشمند نہ تھا جن کے لئے چیف جسٹس آف پاکستان نے 9 رکنی بنچ تشکیل دیا تھا درخواست گزار شاہد اورکزئی نے کہا کہ اس کی پٹیشن کی سماعت فقط دو ججوں پر مشتمل بنچ کر سکتا ہے کیونکہ اس کی پٹیشن میمو کیس سے متعلق کوئی قانونی سوال شامل نہیں یاد رہے کہ این آر او کیس میں 16 ججوں کے متفقہ فیصلے کے بعد صدارتی استثنا کی بحث چھڑ گئی اور تاحال فیصلے پر عمل درآمد نہ ہوسکا۔

یہ بھی پڑھیں  اسپیکررولنگ،اٹارنی جنرل کی کمرہ عدالت میں بدتمیری وکلامشتعل،پولیس طلب

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker