شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / پاکستان / سپریم کورٹ کا اصغر خان عملدرآمد کیس بند نہ کرنے کا فیصلہ

سپریم کورٹ کا اصغر خان عملدرآمد کیس بند نہ کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد(پاک نیوز) سپریم کورٹ نے اصغر خان عملدرآمد کیس بند نہ کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایف آئی اے نے فائل بند کرنے کی استدعا کی ہے، کیسے ہم عدالتی حکم کو ختم کر دیں، اس معاملے کی مزید تحقیقات کرائیں گے۔سپریم کورٹ میں اصغر خان عملدرآمد کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے سلمان اکرم راجا کو عدالتی معاون مقرر کر دیا۔ چیف جسٹس نے کہا کیس کو کیسے بڑھائیں، سلمان اکرم راجا معاونت کریں، ایک فیصلہ آیا اور اب عملدرآمد کے وقت ایسا ہو رہا ہے، کچھ افراد کو معاملے سے علیحدہ کرنے کی تجویز تھی۔ سلمان اکرم راجا ایڈووکیٹ نے کہا ایسا نہیں ہونا چاہیئے، ایک شخص کہہ رہا ہے اس نے رقم تقسیم کی۔ جس پر چیف جسٹس نے کہا اس کے بعد پھر کیا رہ جاتا ہے ؟ اصغر خان کی کوشش کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے، کیس بندش کے معاملے میں اصغر خان فیملی کو اعتماد میں نہیں لیا گیا، ایف آئی اے کے پاس اختیارات نہیں، دوسرے ادارے سے تحقیقات کرا لیتے ہیں، فیصلہ آیا تو اس وقت کے چیف جسٹس سے ملا۔ عدالت نے ایف آئی اے اور سیکرٹری دفاع سے ایک ہفتے میں جواب بھی طلب کرلیا ہے۔یاد رہے لواحقین نے اصغر خان کیس بند کرنے کی مخالفت کی تھی۔ سپریم کورٹ میں جمع کرائے گئے جواب میں لواحقین نے کہا اصغر خان کیس میں ایف آئی اے انکوائری ختم نہیں ہونی چاہئے، ایف آئی اے کی انکوائری ختم کرنے کی سفارش کو مسترد کرتے ہیں، خاندان کیس کا منطقی انجام چاہتا ہے، کیس کے ٹرائل کے بعد سامنے آنے والا نتیجہ عوام کے سامنے رکھا جائے۔جواب اصغر خان کی اہلیہ، بیٹے اور بیٹوں کی جانب سے مشترکہ طور پر جمع کرایا گیا۔ جواب اصغر خان کیس میں ان کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے جمع کرایا

یہ بھی پڑھیں  بھائی پھیرو:سوشل سکیورٹی ہسپتال سے چوری ہونے والا ٹرانسفارمر ملتان میں برآمد