پاکستانتازہ ترین

فل کورٹ اجلاس: ٹی وی چینلز کے پروگراموں کا جودیشل نوٹس

سپریم کورٹ کے فل کورٹ اجلاس نے دنیا ٹی وی اور دیگر چینلز کے پروگراموں کا جودیشل نوٹس لے لیا، رجسٹرار نے اپنے نوٹ میں لکھا ہے کہ فوٹیج سے ثابت ہو گیا ہے کہ ملک ریاض نے اینکرز کے ساتھ مل کر عدلیہ کو بدنام کرنے کی کوشش کی۔ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا فل کورٹ اجلاس جاری ہے۔ اجلاس میں چیئرمین پیمرا نے ملک ریاض کے دنیا ٹی وی پر بدھ کی رات دیئے گئے انٹرویو کی ریکارڈنگ پیش کی۔ انٹرویو کی ویڈیو فل کورٹ اجلاس میں بھی دکھائی گئی۔ رجسٹرار کے نوٹ کے مطابق ملک ریاض نے مہر بخاری اور مبشر لقمان کے ساتھ انٹرویو پلانٹ کیا۔ رجسٹرار نے نوٹ میں لکھا ہے کہ آف اسکرین ویڈیو مختلف نجی ٹی وی کے پروگرامز میں دکھائی گئی۔ ملک ریاض کے دنیا ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو کی فوٹیج سے ثابت ہو گیا ہے کہ ملک ریاض نے اینکرز کے ساتھ مل کر عدلیہ کو بدنام کرنے کی کوشش کی۔ چیف جسٹس نے چیئرمین پیمرا سے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ کوئی پوچھنے والا نہیں، انہوں نے سوال کیا کہ آپ دیکھتے نہیں کہ ٹی وی پر کیا ہو رہا ہے، دن رات عدلیہ کو بدنام کیا جا رہا ہے پیمرا کیا کر رہا ہے، کیا اس انٹرویو میں کوئی خلاف ورزی نہیں ہوئی، چیف جسٹس نے کہا کہ عدلیہ سے متعلق تو پارلیمنٹ میں بھی بات نہیں ہو سکتی۔ یہ چیزیں میڈیا پر چل رہی ہیں تو پیمرا نے کیا کیا۔ چیئرمین پیمرا نے جواب میں کہا کہ جب شکایت آتی ہے تو اس پر کارروائی کرتے ہیں۔ خلاف قانون کام کرنے والے چینلز کو نوٹس جاری کرتے ہیں اور قانون کے خلاف کام کرنے والے چینلز کے لائسنس بھی منسوخ کئے۔ چیف جسٹس نے چیئرمین پیمرا سے میڈیا سے متعلق ریگولیٹری فریم ورک پر بھی سوال کئے۔ فل کورٹ اجلاس ابھی جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں  صحافت کے ماتھے پر بدنما داغ

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker