تازہ ترینعلاقائی

5ہزار چولستانی بچوں کا تعلیمی مستقبل داؤ پر لگ گیا

بہاولپور (بیو رو چیف) ایم ڈی چولستان کی تعلیم دشمن پالیسی صحرائے چولستان میں قائم 75کمیونٹی پرائمری سکولز بند کرنے کا عندیہ دے دیا 5ہزار چولستانی بچوں کا تعلیمی مستقبل داؤ پر لگ گیا وزیر اعلی پنجاب ہمارے سکولوں کو اور ہمارے تعلیمی مستقبل کوبچائے چولستانی طالب علموں کا مطالبہ تفصیل کے مطابق حکومت پنجاب نے چولستان ترقیاتی ادارہ کے زیر انتظام صحرائے چولستانکے چولستانی بچوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے کے لیے 75کمیونٹی پرائمری سکولز بنائے تھے جہاں پر 5ہزار سے زائد چولستانی بچے تعلیم حاصل کررہے تھے اور ان 75سکولوں میں ہر سکول میں ایک جونیئر خواتین ٹیچر اور سینئر ٹیچر بھی تعینات تھیں جو چولستان سے تعلق رکھتی تھی سی ڈی اے اس مہنگائی کے دور میں جونیئرٹیچر کو 2500روپے اور سنیئر ٹیچر کو 5000روپے تنخواہ دے رہا تھا گزشتہ دو سالوں سے ان سکولوں کے تعلیمی تنائج سو فیصد تھے مگر ایم ڈی چولستا ن کی عدم دلچسپی اور اساتذہ کی قلیل تنخوایوں میں بھی بے قاعدگی کے باعث سات اساتذہ ایم ڈی چولستان کے رویے کے باعث نوکری چھوڑ چکی ہے اور سکولوں مین نصاب کی کتابیں نہ دینے اور سکولوں میں غیر نصابی سرگرمیوں کے لیے رکھے گئے فنڈز استعمال نہ کرنے کے باعث دو سکول شریف آباد حاصل پور اور چک 240ون ایل سکول بند ہو چکے ییں اور مزید سکولوں کے بند ہونے کا اندیشہ ہے کیونکہ ایم ڈی چولستان جاوید اختر چولستان میں قائم سکول پراجیکٹ کو بند کرنے کا عندیہ بھی دیگر افسران کو دے چکے ہے جس کے باعث ہزار سے زائد چولستانی بچے جوان سکولوں میں زیر تعلیم کا مستقبل داؤ پر لگ گیا ہے چولستانیوں نے کہاہے کہ اگ یہ سکول بند ہو گئے تو ہمارے بچے دوبارہ بھیڑیں چرانے پر مجبور ہو جائے گے انہوں نے سیکرٹر ی پی اینڈڈ ی ‘وزیر اعلی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نوٹس لیتے ہوئے چولستانی بچوں کے تعلیمی مستقبل کو بچائیں۔

یہ بھی پڑھیں  ،،کالاباغ ڈیم کی وقت کی اہم ضرورت ،،

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker