تازہ ترینکالمنصرت سرفراز

تقاضائے عشقِ محمد صلی اللہ علیہ وآلہٖ وسلم

جمعہ 21ستمبر یومِ عشقِ مصطفی ﷺمنانے کا اعلان حکومتِ پاکستان کی جانت سے کیا گیا یوں محسوس ہوا کہ بالآخر حکومت عوام کے جذبات و احساسات کی ترجمان بن گئی حالانکہ یہ بات ایک کھلی حقیقت ہے کہ کوئی ایک دن یومِ عشقِ مصطفیﷺ ہرگز نہیں ہے ہمارا یک ایک دن اور ہرہر لمحہ عشقِ مصطفیﷺ میں ڈوبا ہوا ہے۔ لیکن سوال یہ ہے کہ عشقِ محمد ﷺ کا تقاضہ کیا ہے؟ اظہارِ عشقِ محمدﷺ کس طرح سے کرنا چاہیے وہ وجود جو وجہ وجود کائنات ہے سراپہ رشدوہدایت ہے انسانیت کی معراج ہے صبر و رضا کا پیکر ہمیں دونوں جہانوں کے سردار ہیں ہمیں اُن کا اُمتی ہونے پر فخر ہے ناز ہے مگر کیا ہم نے اُن کا اُمتی ہونے کا ثبوت صحیح معنوں میں پیش کیا؟ ہم نے اسلام کا اور اُمتِ محمدیﷺ ہونے کا کون سا نمونہ دنیا کے آگے پیش کیا؟؟؟؟ جلاؤ گھیراؤ املاک کا نقصان بنک جلا دیئے گئے اے ٹی ایم مشینیں لوٹ لی گئیں دہشت گردی لاٹھی چارج شیلنگ خون خرابہ حتیٰ کہ انسانیت کی توہین کی انتہا بے گُناہ لوگوں کا قتل مرنے والا کون تھا؟ مسلمان! مارنے والا کون تھا؟ مسلمان مرنے والے کو مرنے کی وجہ معلوم نہیں تھی اور مارنے کی پلانگ تھی جس میں وہ سو فیصد کامیاب رہابھائی کو بھائی سے لڑوا دیا ایک اُمتی کاخون دوسرے جانثار نے بلاقصور بہا دیا اس سر زمین پر جو پاک ہے پاکستان کہلاتی ہے اسلام کا قلعہ ہے ایٹمی طاقت ہے دشمن نے دیوار پر شہد لگادیا اور دور بیٹھ کر ہماری ہمارے اپنے ہاتھوں تباہی کا تماشہ اور مناظر دیکھ کر خوش ہوتا رہا اور اس کو خوش کرنے میں اُس کی محنت سے زیادہ ہماری بے وقوفی کا ہاتھ تھا۔ پاکستان کا کوئی شہر کوئی محلہ کوئی گھر اور کوئی آنکھ ایسی نہ تھی جو اِن درد ناک مناظر کو دیکھ کر خون کے آنسو نہ رویاہو۔ لیکن یہ کس قدر تلخ حقیقت ہے کہ یہ ہم ہی لوگ ہیں جو کہ ظالم بھی ہیں اور مظلوم بھی ہیں بہادر بھی ہیں اور بزدل بھی ہیں اعلیٰ بھی ہیں اور آلہء کار بھی ہیں جو نقصان کر بھی رہے ہیں اور اُسی نقصان کے حصہ دار بھی ہیں جو آگ میں جل بھی رہے ہیں اور دشمن ہینگ لگے نہ پھٹکری رنگ بھی آئے چوکھا کے مصداق ہماری بربادی و تباہی کے یہ مناظر دیکھ کر لطف اندوز ہورہا ہے Paid Advertismentکے ذریعہ ہمیں یہ بھی باور کرایا جارہا ہے کہ ہم معصوم ہیں ہمارا مقصد وہ نہیں جو آپ سمجھ رہے ہیں ہم نادان دوستوں اور دانا دشمنوں کے نرغے میں ہیں ہمارا مقصد اُن گستاخانہ فلموں اور خاکوں پر پابندی لگوانا تھا اُن کو بین کرانا تھا ملعون ٹیری جونزکو کٹہرے میں لانا تھا یا مسلمانوں کے ہاتھوں مسلمان کا خون بہا کر اسلام مسلمان اور اُمتِ محمدیﷺ کو بدنام کرنا تھا۔۔۔
کوئی اور تو نہیں ہے پسِ خنجر آزمائی
ہمیں قتل کررہے ہیں ہمیں قتل ہورہے ہیں
کیا ہماری بقاء کے لئے باہر سے کوئی آئے گا؟ نہیں ہرگز نہیں ہمیں خود بیدار ہونا پڑے گا ہم جو اپنے آپ کو اُمتِ محمدیﷺ کہتے نہیں تھکتے ہمیں سیرت محمدﷺ کو اپنی زندگیوں کا حصہ بنانا ہوگا عشقِ مصطفیﷺ یہ ہے کہ ہم سنتِ محمدﷺ کی پیروی کریں ہم برداشت صبر اور تحمل و بردباری کا ثبوت پیش کریں نہ کہ ہم اپنے ہی مسلمان بھائیوں کی تباہی و بربادی کا سامان خود کریں۔
یہ گھڑی محشر کی ہے تو عرصہ محشر میں ہے
پیش کر غافل عمل کوئی اگر دفتر میں ہے
اللہ تعالیٰ سے دُعا ہے کہ وہ ہمیں سنت نبی ﷺ کی پیروی کرنے اور صحیح اور عملی مسلمان بننے کی توفیق عطافرمائے۔ (آمین)
کی محمد ﷺ سے وفا تونے تو ہم تیرے ہیں
یہ جہاں چیز ہے کیا لوح و قلم تیرے ہیں

یہ بھی پڑھیں  قصور: شہر اور اسکے گردونواح میں چوری اور ڈکیتی کی مختلف وارداتیں

یہ بھی پڑھیے :

4 Comments

  1. taqazayishqemuhammad pbuh  par likha gaya bohat khobsoorat coloumn hy ye bat vaqai sach hy ky …….       koi aur to nahi hy pasy khanjar azmai…………hum hi qatl kar rahy hain hum hi qatal ho rahy hain ……….

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker