شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / ٹیکسلا : پولیس کا ستایا ہوا مظلوم محمد افضال پولیس مظالم کے خلاف پھٹ پڑا

ٹیکسلا : پولیس کا ستایا ہوا مظلوم محمد افضال پولیس مظالم کے خلاف پھٹ پڑا

ٹیکسلا ( نا مہ ننگار)پولیس کا ستایا ہوا مظلوم محمد افضال پولیس مظالم کے خلاف پھٹ پڑا ۔کینٹ چوکی ٹیکسلا ۔ایف آئی آر درج کرنے کی فیس پچیس سو روپے ۔ جرائم پیشہ افراد کو کوئی پوچھنے والا نہیں اے ایس آئی زرین شاہ نیجیب گرم کئے بغیر ایف آئی آر درج کرنے سے انکار کر دیا ۔ایف آئی آر درج کرانے کے بعد بھی پولیس ملزمان کو گرفتار کرنے مین ناکام رہی ۔تفصیلات کے مطابق محمد افضال جو لیہ کا رہائشی ہے اور ٹیکسلا میں ایچ آئی ٹی ٹول پلازہ پر ملازم ہے نے میڈیا کو بتایا کہ 5مئی رات نو بجے ٹول پلازہ پر ڈیوٹی سر انجام دے رہا تھا کہ ایک سوزوکی کو روک کر ٹیکس مانگا جو اس نے دینے سے انکار کر دیا اور بدتمیزی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مجھے گالیاں بھی دیں اسی دوران اس نے لوہے کی سلاخ میرے سر پر ماری جس سے میں زخمی ہو گیا اور میرے سر سے خون بہنے لگا اور میں گر پڑا میرے شور شرابے کی آواز سن کر میرے دو دوست آگئے جنہوں نے بڑی مشکل سے میری جان بچائی اس دوران سوزوکی والا بھاگ نکلنے میں کامیاب ہو گیا مگر میرے دوستوں نے پولیس کے ساتھ ملکر گاڑی والے کو پکڑ لیا مگر پولیس نے ساز باز کر کے اور جیب گرم کر کے اسے چھوڑ دیا اور محمد افضا ل نے بتایا کہ اے ایس آئی زرین شاہ تفتیشی نے ایف آئی درج کرنے کے پچیس سو روپے بھی لئے مگر ملزمان کے خلاف تا حال کوئی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی اور پولیس زرین شاہ مجھے کہتا ہے کہ تم دعا کرو تمہیں انصاف ملے ہم کچھ نہیں کر سکتے، ایچ آئی ٹی میں تعینات چوکی انچارج اور عملہ کی کرپشن کے چرچے ہر زبان پر ہیں ، لوگوں کا پولیس سے اعتماد اٹھتا جارہا ہے مگر پولیس شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کی بجائے اپنی جیبیں گرم کرنے میں مصروف ہیں،

یہ بھی پڑھیں  گھوٹکی :کچے علاقے میں پولیس کی فائرنگ سے دیہاتی ہلاک