تازہ ترینعلاقائی

عدالتوں کا قیام موجودہ عدالتی سسٹم پر پارلیمانی عدم اعتماداور یاست کی ناکامی کے اعتراف کا مظہر ہے:ڈاکٹر فرید احمد

ٹیکسلا( ڈاکٹرسید صابرعلی/نامہ نگار)ڈپٹی جنرل سیکرٹری جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر فرید احمد نے کہا ہے کہ فوجی عدالتوں کا قیام موجودہ عدالتی سسٹم پر پارلیمانی عدم اعتماداور یاست کی ناکامی کے اعتراف کا مظہر ہے، جماعت اسلامی ننے قومی یکسوئی ، اتحاد اور ملک کے وسیع تر مفاد میں اسکا احترام کیا،پوری قوم کی نظریں حکومت پر مرکوز ہیں کہ وہ پارلیمنٹ سے اتنے اختیارات لینے کے بعد بھی کامیاب ہوتی ہے یا نہیں،ملک میں رائج بادشاہت کا نظام عوامی مسائل کے حل میں بڑی رکاوٹ ہے،مسلم امہ کے حکمرانوں کی بے حسی امت مسلمہ کی تنزلی کا سبب بن رہی ہے،واہگہ بارڈر پرایک ماہ پہلے اطلاع کے باوجود شتگردی کا واقعہ رونما ہونا سیکورٹی ایجنسیوں اور حکومت کی مجرمانہ غفلت کا نتیجہ تھی،ان خیالات کا اظہار انھوں نے جماعت اسلامی واہ کینٹ کے زیر اہتمام مرکز اویس شہیدجی ٹی روڈ میں منعقدہ سیرت کانفرنس سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا سے خصوصی گفتگو کے دوران کیا ، سیرت کانفرنس سے مرکزی مجلس شوری ٰ کے رکن و نائب امیر ضلع راولپنڈی پروفیسر محمد وقاص خان،مولانا عتیق الرحمان شاہ،راجہ حبیب الرحمان نے بھی خطاب کیا ، ڈاکٹر فرید احمد پراچہ کا کہنا تھا کہ عوام مہنگائی ، بیروزگاری اور بد امنی کی چکی میں پس رہے ہیں مگر حکمران اپنے اقتدار کو دوام بخشنے میں تدابیر کر رہے ہیں،انھوں نے کہا کہ عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات میں ساٹھ فیصد کمی ہوگئی ہے مگر عوام کو رتی بھر ریلیف نہ مل سکا ،موجودہ حکمران بلدیاتی انتخابات سے راہ فرار اختیار کر رہے ہیں کیونکہ یہ لوگ خوفزدہ ہیں کہ وہ کیسے عوامی عدالت میں جائیں جبکہ انھوں نے تو عاوم کو کچھ بھی ڈلیور نہیں کیا،انھوں نے صرف اپنے اثاثوں کو مستحکم کیا،گستاخانہ خاکوں کی اشاعت پر تبصرہ کرتے ہوئے انکا کہان تھا کہ یہ یہودیوں کی سوچی سمجھی سازش ہے،جس کا منصوبہ 1896 میں تیار کیا گیا،جس میں قرضوں کی فراہمی کر کے دنیا کے ممالک کی معیشت کو کنٹرول کرنا،دنیا بھر کے میڈیا کو کنٹرول کرنا ،عالمی سطح پر یہودی ریاست کا قیام شامل تھا،انکا کہنا تھا کہ پاکستان اسوقت ستر ارب ڈالرز کا مقروض ہے جبکہ سود کی مد میں 94 ارب ڈالرز پاکستان ادا کرچکا،یہودیوں کا ایجنڈا ہے کہ ملکوں کو قرضے دیکر انکی معیشت کو کنٹرول کرنا ہے،دنیا میں اصل انقلاب حضورﷺ لیکر آئے جس سے دنیا بدل دی،جس میں ہر شعبہ زندگی تبدیل ہوئی،امریکہ طاقت کے نشے میں مست ہوکر معصوم لوگوں کا خون بہا رہا ہے اب تک چار کروڑ افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں،انکا کہنا تھا کہ افغانستان سے روسی فوجوں کے انخلاء کے بعد عالم اسلام کے خلاف اعلان جنگ کیا گیا،مغرب سوشل میڈیا اور دوسرے زرایع سے تہذیبی یلغار کر رہا ہے،دہشتگردی کے واقعات پر عالمی ضمیر سو رہا ہے،اس وقت پوری دنیا میں ایک بھی ملک مکمل طور پر اسلامی ریاست نہیں،جبکہ پوری دنیا کے ستر فیصد وسائل مسلم ممالک کے پاس ہیں،ہم اس تصور جمہوریت کو بھول چکے جو اسلام نے ہمیں دیا،اللہ سے ڈرنے والا حکمران ہی کرپشن سے پاک ہوسکتا ہے،یہودی لابی اظہار رائے کی آڑ میں مسلمانوں کے جذبات کو مجروع کر رہی ہے، حضورﷺ کی شان میں گستاخی کر کے سات کروڑ افراد کی دل آزاری کی گئی ،یہود ونصاریٰ مسلمانوں کے جسم سے روح محمدی نکالنے کے لئے ناپاک جسارت کرنے کی گھناونی سازش کر رہے ہیں ،ضرورت اس امر کی ہے کہ اسلامی ممالک میں مکمل طور پر اسلامی حکومت قائم ہو جس میں تمام تر قانون سازی اسلام کے تابع ہو،سیرت کانفرنس میں اراکین جماعت اسلامی کے علاوہ کثیر تعداد میں مرد خواتین موجود تھیں،

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!