تازہ ترینعلاقائی

ٹیکسلا:پولیس کی سماج دشمن عناصر کے خلاف کاروائی، قمار بازی کے اڈوں پر چھاپہ، نو ملزمان گرفتار

ٹیکسلا( نامہ نگار)پولیس تھانہ صدر واہ کینٹ کی سماج دشمن عناصر کے خلاف کاروائی ، واہ کینٹ کے علاقہ منیر آباد اور لوسر شرفو میں قمار بازی کے اڈوں پر چھاپہ مار کر نو ملزمان رنگے ہاتھوں گرفتار کر لئے پولیس نے داو پر لگی 80 ہزار کے قریب نقد رقم اور ہزاروں روپے مالیت کے نو عدد قیمتی موبائل بھی قبضہ میں لے لئے ، منشایت فروشوں کے خلاف کاروائی کے دوران چار خواتین سمیت سات افراد کو دھر لیا قبضہ سے چار کلوگرام چرس اور گردہ برآمد کر کے ملزمان کے خلاف منشیات ایکٹ کے تحت مقدمات درج کر لئے ،میڈیا سے گفتگو کے دوران ایس ایچ او تھانہ صدر ثنا ء اللہ خان نیازی کا کہنا تھا کہ پولیس اپنے فرائض سے غافل نہیں ،جرائم کی بیخ کنی ہماری اولین ترجیحات ہے تاہم جرائم کے خاتمہ کے لئے شہریوں کا تعاون ناگزیر ہے ، تفصیلات کے مطابق پولیس تھانہ صدر واہ کینٹ نے مختلف کاروائیوں کے دوران واہ کینٹ کے علاقہ منیر آباد اور لوسر شرفو سے قمار بازی کے اڈے پر چھاپہ مار کر نو افراد کو گرفتار کر کے انکے قبضہ سے 80 ہزار روپے نقدی ، نو عدد قیمتی موبائل برآمد کر لئے، پولیس نے فیاض اکبر،محمد امین،شوکت،عمران،عبدالحمید،محمد شاہد،و دیگر کو گرفتار کر کے مقدمات درج کر لئے، ادہر پولیس کی چیکنگ کے دوران دوسری کاروائی میں چار خواتین یاسمین بی بی،نرگس،صائمہ، ہرینہ بی بی سمیت سات منشیات فروشوں محمد عثمان،انیس احمد،امیر حمزہ،عباس،کو گرفتار کر کے انکے قبضہ سے چار کلو گرام چرس اور گردہ برآمد کر لیا پولیس نے منشیات ایکٹ کے تحت مقدمات درج کر لئے میڈیا سے گفتگو کے دوران ایس ایچ او تھانہ صدر واہ کینٹ ثنا ء اللہ خان نیازی کا کہنا تھا کہ تھانہ میں 83 کے قریب نفری کی کمی ہے اس کے باوجود پولیس جرائم کے خاتمہ میں اپنا بھرپور کردار ادا کر رہی ہے،انھوں نے بتایا کہ سابقہ ریکارڈ یافتہ جرائم پیشہ افراد کی فہرستیں بنا لی گئیں ہیں اور پولیس نے انکے خلاف کریک ڈاون کا آغا زکردیا ہے،ریکارڈ یافتہ ملزمان کی گرفتاری سے علاقہ میں چوری ، راہزنی ، ڈکیتی اور دیگر وارداتوں میں کمی آئی ہے،دراصل یہی لوگ جرائم پیشہ افراد کی پشت پناہی کر رہے ہیں ، ماڈل ٹاون آئل ایجنسی میں ڈکیتی کی واردات کے حوالے سے انھوں نے بتایا کہ پولیس نے سی سی ٹی وی فوٹجز حاصل کرنے کے بعد تیکنیکی بنیادوں پر تفتیش شروع کر رکھی ہے عنقریب ڈکیتی میں ملوث ملزمان قانون کے کٹہرے میں ہونگے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
error: Content is Protected!!