پاکستانتازہ ترین

سیکرٹری اسلام آباد ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے نامناسب رویہ کیخلاف ٹرانسپورٹرزکااجلاس منعقد ہوا

transportersاسلام آباد؛راولپنڈی (ڈپٹی بیورو چیف)اسلام آباد ٹرانسپورٹ یونین کے زیر اہتمام سیکرٹری اسلام آباد ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے نا مناسب رویہ کے خلاف گذشتہ روز ہنگامی اجلاس منعقد ہوا جس میں وفاقی دارلحکومت کے تمام روٹس کے ٹرانسپورٹرز ، ڈرئیوارز نے شرکت کی اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد ٹرانسپورٹ یونین کے صدر حاجی ملک نواب خان اور جنرل سیکرٹری کبیر احمد کیانی نے کہا کہ اسلام آباد ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے نامناسب رویہ کے خلاف وفاقی دارالحکومت کے تمام ٹرانسپورٹرزسراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں سیکرٹری آئی ٹی اے کی جانب سے حکومتی خزانے میں فیس و جرمانے جمع کروانے ، نئے روٹ پرمٹ کی اجراء ، سپیشل پاسزکے پیچیدہ نظام کے خلاف ہمیں ہڑتال کرنے پر مجبور کیا جا رہا ہے ۔تفصیلات کے مطابق وفاقی دارلحکومت کے مختلف روٹس پر چلنے والی پبلک ٹرانسپورٹ کے مالکان ، ڈرئیوارزاور یونین کے صدر حاجی ملک نواب خان ، سیکرٹری کبیر احمد کیانی ،راجہ محمد جاوید،لیاقت علی، ملک شوکت،حاجی اختر اعوان کنونیر متحدہ ٹرانسپورٹ یونین،ملک ظفر، سردار فیاض ، سردار سرفراز، رانا محمد رفیق، سیف الرحمان ، رمیض خان ، چہودری عبد الرحمان ، راجہ جہانگیر، شبیر خان، یعقوب نورو دیگر نے سیکٹری آئی ٹی اے کے رویہ کے خلاف18 نومبر کو ہڑتال جلسوں اور جلسے کریں گے اور جب تک سیکرٹری آئی ٹی اے کوانتظامیہ ہٹائے گی نہیں تب تک ہمارا احتجاج جاری رہے گا سیکرٹری آئی ٹی اے کے رویہ کے خلاف اسلام آباد ٹرانسپورٹ یونین کے عہدیدار اور ٹرانسپورٹ مالکان چیف کمشنر ، ڈپٹی چیف کمشنر ، ایڈیشنل چیف کمشنرکو آگاہ کر چکے ہیں کہ سیکرٹری کی تعیناتی کے بعد پبلک ٹرانسپورٹ کے مالکان ، ڈرائیورز کیلئے فیس، جرمانے ، نئے پر مٹ کے اجراء کے حوالہ سے انتہائی پیچیدہ نظام متعارف کروا دیا ہیاور سپیشل پاس جس کی فیس صرف سو روپے ہے اس کو جمع کروانے کے لئے کئی بار ایک دفتر سے دوسرے دفتر جانے کے لئے کئی بار چکر لگانے پڑتے ہیں پہلے ای ٹی او آفس کے لاکھوں روپے اہلکاروں کے دستخطوں سے جمع ہوتے تھیں تاہم سیکرٹری آئی ٹی اے نے آتے ہی ٹرانسپورٹر ز کے لئے انتہائی پیچیدہ نظام متعارف کر وا دیا ہے جس سے پورا دن س نظام کے تحت قومی خزانے میں فیس جمع کروانے میں لگ جاتاہے ٹرانسپورٹ یونین کے عہدیداروں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم وفاقی دارلحکومت میں 20سال سے انتظامیہ کے ساتھ ملکر چل رہے ہیں اور ہر مسئلہ میں ہم انتظامیہ اور انتظامیہ ہمارا ساتھ دیتی ہے مؤلیکن موجودہ حالات میں ہمارے ساتھ مسلسل زیادتی کی جا رہی ہے جس کے بارے میں اسلام آباد انتظامیہ کو تحریری طور پر آگاہ کر دیا گیا ہے اور اس ایشو پر انکوائری کمیٹی بھی بنا دی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button