تازہ ترینکالم

یونیک پارٹی کاخاتمہ ہوا چاہتاہے

عوام کے سامنے (ن) لیگ بھی اور پیپلز پا رٹی بھی ، ق لیگ اور با قی ہوا کر تی تھیں اور ہیں بھی ، مگر عوام تھک تھکا کر بس اس خواہش میں تھی کہ کو ئی ملک قوم کو آ گے بڑ ھا نے کے جذ بے میں ایسے کہے بقو ل شا عر
ایسے دیو انے پھر نہ آئیں گے
دیکھ لو ہم کو بے مثا ل ہیں ہم
عوام کی اس خو اہش کو بھا نپ لیا گیا تھا ، خاں صا حب کر کٹ سے فا رغ ہو ئے تو ماں جی کے درد میں کینسر ہسپتال بنا یا ، اس میں عوام کی طر ف خو ب مثبت جو اب ملا تو ، خاں صا حب نے سیا ست میں انٹر ی دے ما ری ، اس وقت سے لے خاں صا حب عوام کے کا نوں میں یہی رس گھو لتے رہے ہیں کہ آ ج تک جتنے بھی سیا ست دان آ ئے ہیں انہوں نے ملک قوم کا نقصا ن کیا ہے ،کو ئی چیک اینڈ بیلنس نہیں ، کوئی جتنے پیسے کھا جا ئے کو ئی کسی کو پو چھتا نہیں ،تو خاں صا حب نے کہا اب یہ نظا م ایسے نہیں چلے گا ، عوام کے سا تھ انصا ف ہو گا اور ہو کر رہے گا ،سیا ست کے دن گز رتے گے ، ایک صو بے کے ملنے کے بعد جب سو چ اور خو اہش وفا ق تک پہنچے کی آ ئی پھر واضع نظر آ گیا کہ جو رس ہم عوام کے کا نوں میں کئی سا لوں سے گھو ل رہے ہیں ، اب ان خیا لا ت سے عا ری ہو ں گے تو با قی سیا سی جما عتو ں کے قا ئد ین کی طر ح کا میا ب ہو ں گے اور وفا ق یا آ خری منزل وز یر اعظم کی ، نصیب ہو گی ، تجز یہ کا ر ، بہت پہلے کہہ چکے تھے ، خا کسا ر کی بھی یہی رائے تھی اور ہے ، کہ جو سینٹ میں نظر آ ئے گا ایسا ملتا جلتا عا م انتخا بات میں نظر آ ئے گا ، اور جو اتحا د اب بنا یا گیا ، ایسے اگلے الیکشن میں حکو مت بنا نے کے وقت نظر �آ ئے گا ، سینیٹ کے الیکشن کی ووٹنگ کے بعد (ن) لیگ کا فی حد تک سیا ستی چا لیں سمجھ گئی تھی ، تب ہی وقت ضا ئع کیے بغیر پیپلز پا رٹی کے رضا ربا نی کی حما یت کا اعلا ن کیا ، اس میں سیا سی دفا ع یہ تھا کہ ہم عوام کو یہ تا ثر دیں گے کہ ہم نے پیپلز پا رٹی سے اتحا د نہیں کیا بلکے صرف رضا ربا نی کیطر ف داری اس لیے کی کیو نکہ رضا ربانی صا حب نے ہا وس بہت اچھے سے چلا یا تو اسی میں قو می مفا د تھا ، با قی ہما را کو ئی سیاسی مفا د وابستہ نہیں تھا ،پیپلز پا رٹی کے زر داری صا حب بہت پہلے کہہ چکے تھے کہ ہم کچھ بھی چا ہیں وہ کر سکتے ہیں اور ن لیگ کو سبق سیکھا ئیں گے، ایک جھلک بلو چستان میں دکھا ئی گئی اس کے بعد ن لیگ وا لے زرداری صا حب کے درمیان جو دو ریا ں تھیں ان کو نہیں ختم کر سکے تو معاملہ سینٹ تک آ یا ، سینیٹ کے الیکشن والی شا م کو ن لیگ کو سا منے وا ضع نظر آ رہا تھا کہ ہما رے سا تھ آ گے کیا ہو نا ہے ، سر ور صا حب کو پیپلز پا رٹی کی طر ف سے ووٹ پڑ ئے اور با قی جو ن لیگ کی طرف سے پڑے وہ ایم پی اے وقت کے سا تھ سا تھ سا منے نظر �آ ئیں گے اور پی ٹی آ ئی میں شا مل ہو تے جا ئیں گے ، صرف پیسے کی بنا ء پر اتنی بڑی سیاسی چال نہیں چلی گئی ۔
تحر یک انصا ف کے پا س یہ وقت تھا ، خو د سے فیصلہ لینے کا ، کہ، وہ ان اعلان کے مطا بق سیا ست کر یں جو آ ج تک جلسے جلسو ں میں کہتے آ ئے یا جس طر ح کی سیا ست کے بعد وفا ق تک پہنچے گے ، وہ کی جا ئے ، فیصلہ ہو ا ، کہ ، عوامی سیا ست کو چھو ڑ ا جا ئے ، سیا سی جما عتوں کی سیاست کو اپنا یا جا ئے ، اسی میں مفا د ہے ، با قی احتیا ط ایسی بر تی جا ئے کہ عوام کو بھی سا تھ چلا یا جا ئے اور عوام بس شک میں رہے کہ دال کا لی ہے ، لیکن عوام فل کا لی دال دیکھ نہ سکے ، تحر یک انصا ف نے فیصلہ کیا کہ پیپلز پا رٹی بلو چستان کے جس سیا ست دان کو ووٹ کر یں گے تو ہم بھی اعلا ن کر تے ہیں کہ اس با ر سینٹ میں بلو چستان کو نما ئند گی دی جا نی چا ہیے ، اور اس نما ئند گی کے لیے ڈپٹی کی سیٹ پیپلز پا رٹی کو دینی پڑ ئے گی ، تو سیا سی دفا ع بن جا ئے گا اور اتحا د کی شر وعات ہو جا ئے گی ، ن لیگ جس تیسر ے ہا تھ کا رونا روتی ہے ،وہ یہاں نظر آ تی ہے ، جس کی جھلک ایسی اگلے الیکشن میں نظر آ ئے گی ۔چلیں تحر یک انصا ف کی منطق ما نتے ہیں کہ چےئر مین سینیٹ بلو چستا ن کا ہو تو بلو چستان میں علیحد گی پسند تحر یک کو زیا دہ ہو ا نہیں مل سکے گی، یہاں پھر وہی سو چ آ تی ہے کہ ، عوام سے پو چھا جا تا ہے کہ نواز شیر یف کو ہی وو ٹ کیوں دو گے ،تو جو اب ملتا ہے کہ صا حب وہ کھا تا ہے تو لگا تا بھی تو ہے ، تو جنا ب یہاں سینٹ کا چےئر مین لگا نے کی جگہ اور ڈپٹی چےئر مین کھا نے کی جگہ ، پھر یو نیک پا رٹی کہاں گئی ،جو کہتی تھی ہم ہر اس سیا ست دان ، اور ہر اس سیا سی پا رٹی کے سا تھ مل کر کا م نہیں کر یں گے جو ملک قو م کا خسا رہ کر تی رہی ہے اور کر پشن میں ملو ث رہی ہے ، اگر مل کر کا م کر یں گے تو ان کا احتسا ب کیسے ممکن ہو سکے گا، مگر اب عوام نے دیکھا کہ تحر یک انصا ف کی ووٹ پیپلز پا رٹی کے نا مز د امید وا ر کو پڑ ئے ،پھر دعوے کد ھر گے جنا ب ، چلیں پھر ما ن لیتے ہیں تحر یک انصا ف نے کڑ وی گو لی کھا ئے کیو نکہ وہ بلو چستا ن کو نما ئندگی دلو انا چا ہتی تھی ، مگر بلو چستان ملک کا حصہ ایسے ما ہر سیا ست دان صر ف بلو چستان کا نہیں پو رے ملک کا نقصان کر تے آ ئے تو کیا اب انکا حسا ب کتا ب نہیں ہو گا ؟ ۔ اگر ہو گا تو ان کو احتسا ب کر یں گے جن کو آ پ خو د ووٹ دیں گے ، عوام کو بے وقو ف ہر سیا سی پا رٹی بنا تی آ ئی ہے مگر وہ منظر سے غائب نہیں ہو ئے کیو نکہ وہ بہت ما ہر سیا ست دان تھے تو عمران خاں صا حب میں اتنی خو بیا ں ہیں یہ سوا لیہ نشا ن اگلے وقتوں میں کلئیر ہو گا ، عوام کے سامنے (ن) لیگ بھی اور پیپلز پا رٹی بھی ، ق لیگ اور با قی ہوا کر تی تھیں اور ہیں بھی ، مگر عوام تھک تھکا کر بس اس خواہش میں تھی کہ کو ئی ملک قوم کو آ گے بڑ ھا نے کے جذ بے میں ایسے کہے بقو ل شا عر
ایسے دیو انے پھر نہ آئیں گے
دیکھ لو ہم کو بے مثا ل ہیں ہم

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker