شہ سرخیاں
بنیادی صفحہ / تازہ ترین / پا کستانی ہیرا اسپین کی سرکاری یونیورسٹی کا اردو پر وفیسرحافظ احمد

پا کستانی ہیرا اسپین کی سرکاری یونیورسٹی کا اردو پر وفیسرحافظ احمد

بل گیٹس نا لا ئق تھا ، آ ج ادارے اس کے تا بع ، کے ایف سی والا با با سا ٹھ سا ل میں کیچن شر وع کر تا تو آ ج پو ری دنیا اس کے پرو ڈکٹ کی دیو نی ، دینا کی اور بھی بہت سی مثالیں ، علی با با والے کو سب نے اگنو ر کیا ، آج وہ کا میا ب بز نس مین، ہما رے پا کستانیوں میں ، کچھ ، کچھ کی ایسی کہا نیا ں ، مگر قر با ن جا ئیں ، ہم گھر کی مر غی کے بر ا بر با ہر کی دال دیکھتے ہیں، ایک لا ئن دی گئی قا رئین کی نظر ،،،
زبا نو ں کے سمند ر میں غو طہ لگا ئیے
با سلو نا میں کا فی ٹا ئم سے ایک صا حب کو اس روٹین میں بز ی پا یا کہ وہ ادب کے شعبے ، اردو ، شا عر ی، اس ذ وق کو با رسلو نا میں قا ئم رکھنے کے لیے پر و گر امز کا انعقا د کر وا نے میں ان کو فر نٹ لا ئن پر پا یا ، بہت ٹا ئم کے بعد ان صا حب سے کل با ر سلونا میں ان سے ملا قا ت ہو ئی تو پو چھا جنا ب کہیں نظر نہیں آ رہے ہیں ، جو اب ملا کچھ جاب ایسی کے وقت نہیں ملتا ، کہا جنا ب جا ب تو سبھی کر تے ہیں ، آ پ بھی کر رہے ہیں ، جو اب ملا ، کہیں بیٹھتے ہیں ، پھر با ت ہو تی ، جو اب ملا ، پہلے جو جا ب کر تا تھا وہی کر رہا ہو ں ، مگر اب سا تھ کچھ اور بھی ہے ، کہا جنا ب اور کچھ کیا سا تھ ، جو اب ملا ، جب شر وع میں با رسلونا آ یا تھا ، تب یہاں کی ایک یو نی ورسٹی میں ایک شعبے کے لیے دا خلہ لینے کی کو شش کی تھی تو نا کا م ہو ا تھا ، ہم نے کہا اچھا جنا ب پھر ، پھر یہ کہ ، کچھ ٹائم بعد پھر کو شش کی تھی ، پھر دا خلہ ملا ؟ ، نہیں پھر بھی نہیں ملا ، اوکے ، تو اب ، اب یہ جنا ب کہ اسی یو نی ور سٹی میں ، میں بطور اردو پر وفیسر وہاں پڑ ھا یا کر وں گا ،اور آ ج کل اس میں بز ی ہو ں کہ یہاں کے جو مقا می لو گ ان میں یہ روش پیدا کی جا ئے کہ جو ہما ری زبا ن اردو سیکھا نا چا ہیے تو اس یو نی ور سٹی میں داخلہ لیں ، ہم ان کو اردو سیکھا ئیں گے ، یہ سن کر بہت خو شی ہو ئی ، ہما رے لیے بہت اعز از کی با ت کہ اسپین کی سر کا ری یو نی ورسٹی میں یہ سلسلہ شر وع ہو رہا کہ جو لو گ ہما ری زبا ن سیکھا نا چا ہتے وہ سیکھ سکتے ہیں ، مگر کو ن اس میں دلچسپی لے گا ، جو اب ملا ، کہ ، وہ لو گ لیں گے ، جیسے یہاں کے مقا می وکیل ، مقا می دفا تر والے ، جن کے کا رو بار ہما رے پا کستا نیوں کے سا تھ ہیں ، ان کو میل جو ل ہما رے سا تھ ہے ، اور کچھ تعد اد ایسی بھی کہ جو پا کستان کے کلچر کو سمجھنے کے لیے زبا ن کو سیکھنے کو ضر وری سمجھتے ، اوکے ، اس کامطلب اس سے پہلے آ پ کو ایسے لو گ ملے جو ہما ری زبا ن سیکھا نا چا ہتے، جی بلکل ، با ر سلو نا میں ابھی تک کہیں بھی یہاں کے لو گ اردو میں ہا ئے ہیلو کر تے ان میں زیا دہ کی تعد اد ایسی جن سے میر ی ملا قا ت اور انہوں نے مجھ سے ہی اردو سیکھی ہے ، اب یہاں کی ان کی ہی سر کا ری یو نی ورسٹی اردو کے داخلے دے رہی ہے ، اور کلا سز کا آ غا ز کر رہے تو بہت سے لو گ اس میں دلچسپی شو کر یں گے ، جو لو گ یو نی ورسٹی آ ئیں گے وہ زیا دہ اردو نہ بھی سمجھیں ، ہما را کلچر وہ ضر ور دیکھیں گے ، اس طر ح بہتر ی آ ئے گی ، یہ بہت اچھی بات ، با رسلونا میں ہما ری کمیو نٹی بز نس میں بہت آ گے جا رہی ہے ، ان کا یہاں کے مقا می لو گوں کے سا تھ میل جو ل زیا دہ ، تو جب ان کو اردو کی کچھ سمجھ بو جھ ہو گی تو دو نوں اطراف کو آ سا نی ہو گی ، اور سب سے بڑی با ت کہ یہ ہما رے کلچر کو سمجھیں گے ، حا فظ احمد صا حب بغیر رکے بولے جا رہے تھے ، ان کے بو لنے کے انداز میں جو مجھے بات متا ثر کر رہی تھی ، وہ یہ تھی کہ حا فظ احمد صا حب کو اس با ت کی خو شی تھی کہ وہ اردو کے لیے یہاں ایسا کا م کر نے جا رہے ہیں جس کا اثر آ نے والی ہما ری یہاں کی نسل کو فا ئد ہ ملنا ہے ، اور یہاں پر پا کستان کا امیج ہم اچھے سے شو کر پا ئیں گے ،اور یہاں کے مقا می لو گوں کے علا وہ با قی دنیا کو بھی تا ثر جا ئے گا کہ اردو ز با ن میں اتنی طا قت اور اس کی ما نگ ہے کہ اسپین کی سر کا ری یو نی ورسٹی میں اس کے لیے کلا سز کا آ غا ز کیا گیا ہے ۔
یہاں کے مقا می لو گوں کا ر سپا نس تو آپ دیکھیں گے ،مگر ہما رے پا کستانی اس معا ملے میں کیا اظہا ر کر رہے ہیں ، جو اب ملا ، کہ، اردو کی پہچا ن پو ری دنیا میں بنے یہ ہم سب پا کستا نیوں کی خو اہش ہے ، تمام کمیو نٹی کی طر ف سے بہت خو شی کا اظہا ر کیا گیا ہے ،
ملا قا ت ختم ہو ئی ، تو وا پس آ تے ، یہ سو چ ذہن میں رہی کہ ، حا فظ احمد صا حب نے ہمت نہیں ہا ری اور جس یو نی ورسٹی میں ان کو ایک بار داخلہ نہیں ملا ، انہوں نے دو بار ہ وہاں کو شش کی ، پھر کا میا ب نہیں ہو ئے مگر ،خدا پا ک جس کو عز ت دے ،اب اسی یو نی ور سٹی نے ان کو بطو ر پر وفیسر ار دو کے شعبے میں جا ب کی آ فر کی ۔
ہما رے پا کستان میں ایسی اور بھی بہت سی مثا لیں ہیں ، جس میں لو گوں نے ہمت نہیں ہا ری اور مشکل وقت میں کا میا بی پر نظر رکھی اور اور پو ری دنیا میں اپنا آپ منو ایا ، کمی ہے تو ، ہما ری طر ف سے کہ ہم دل کھو ل کر ان کی حو صلہ افز ائی نہیں کر تے، یہ ٹھیک ہے کہ با قی دنیا میں جو کا میا ب لو گ ان کی مثالیں کو ڈ کی جا ئیں ، مگر ، مگر اپنے ہیر ے جو ہو تے ان کی چمک بھی سب کو دیکھا نی چا ہیے ۔ بل گیٹس نا لا ئق تھا ، آ ج ادارے اس کے تا بع ، کے ایف سی والا با با سا ٹھ سا ل میں کیچن شر وع کر تا تو آ ج پو ری دنیا اس کے پرو ڈکٹ کی دیو نی ، دینا کی اور بھی بہت سی مثالیں ، علی با با والے کو سب نے اگنو ر کیا ، آج وہ کا میا ب بز نس مین، ہما رے پا کستانیوں میں ، کچھ ، کچھ کی ایسی کہا نیا ں ، مگر قر با ن جا ئیں ، ہم گھر کی مر غی کے بر ا بر با ہر کی دال دیکھتے ہیں، ایک لا ئن دی گئی قا رئین کی نظر ،،،
زبا نو ں کے سمند ر میں غو طہ لگا ئیے

یہ بھی پڑھیں  لاہورمیں تیزآندھی اوربارش گرمی کازورٹوٹ گیا،تاریں ٹوٹنے سے بجلی غائب