بین الاقوامیتازہ ترین

اوباما انتظامیہ مغوی فوجی کے بدلے 5 طالبان قیدی رہا کرنے پر تیار ہے، امریکی اخبار

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی اخبار نے انکشاف کیا ہے کہ اوباما انتظامیہ افغانستان سے انخلا سے قبل طالبان کی قید میں موجود امریکی فوجی کے بدلے 5 افغان طالبان کو رہا کرنے کے لئے تیار ہے۔ امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے اپنی ایک رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ اوباما انتظامیہ افغانستان سے 2014 میں ممکنہ انخلا سے قبل 2009 سے طالبان کی قید میں موجود امریکی فوجی بو بریغدال کی رہائی کے بدلے بدنام زمانہ جیل گوانتانا موبے میں قید 5 افغان طالبان کو رہا کرنے کے لئے طالبان قیادت سے مذاکرات کرنا چاہتی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ امریکی صدر دفتر وائٹ ہاؤس، امریکی محکمہ خارجہ اور فوجی ہیڈ کوارٹر پینٹاگون نے امریکی فوجی کی رہائی کے بدلے گوانتانا موبے میں قید 5 طالبان قیدیوں کو رہا کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ پینٹاگون کے پریس سیکرٹری ریئر ایڈمرل جان کیربے کا کہنا تھا کہ ہر حال میں امریکی فوجی کی واپسی چاہتے ہیں اور کبھی بھی امریکی فوجی کی رہائی کے حوالے سے کوششیں ترک نہیں کیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پہلے بھی امریکی فوجی کی رہائی کے لئے طالبان سے بات چیت کی گئی تھی اور اب بھی کی جائے گی۔ واضح رہے کہ طالبان نے امریکی فوجی کو 2009 میں افغانستان کے صوبے پکتیا سے اغوا کیا تھا اور اس سے قبل بھی امریکا کی جانب سے مغوی فوجی کے بدلے ایک یا 2 طالبان قیدی رہا کرنے کی آفر کی تھی جب کہ طالبان کی جانب سے مغوی امریک فوجی کی رہائی کے بدلے 10 لاکھ امریکی ڈالر اور 21 قیدی رہا کرنے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں  بارش کے موسم میں درجنوں شہری لڑکیوں کو لفٹ دینے میں لٹ گئے

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker