بین الاقوامیتازہ ترین

امریکہ رک نہیں سکتا :اوباما

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر براک اوباما نے اپنے سالانہ صدارتی خطاب میں قوم سے وعدہ کیا ہے کہ اگر معاشی عدم مساوات کو ختم کرنے کے لیے انہیں منقسم کانگریس کو نظر انداز کرنا پڑا تو وہ کریں گے اورقانون سازی کے بغیر بھی ہر ممکن اقدامات کرنے کا وعدہ کیا۔انہوں نے ایک ایگزیکٹو حکم جاری کیا جس میں وفاقی کانٹریکٹ کے تحت کام کرنے والے افراد کو فی گھنٹہ کم سے کم دس دس ڈالر ملیں گے۔اوباما 2009 ءمیں پہلی بار صدر بننے کے بعد سے اب تک وہ اپنی مقبولیت سب سے خراب دور سے گزر رہے ہیں۔صدر اوباما نے کہاکہ وہ اس سال کو فعال اور سرگرم سال بنائیں گے۔انہوں نے کہا کہ عدم مساوات بڑھتی جا رہی ہے اور ترقی رک چکی ہے ایسے میں وہ ’قابل عمل ٹھوس تجاویز کا ایک سیٹ فراہم کریں گے جس سے ترقی کی رفتار میں اضافہ ہو، متوسط طبقہ مضبوط ہو اور ان کے لیے مواقع کے نئے زینے تیار ہوں۔‘بی بی سی کے مطابق انہوں نے کہا کہ ’امریکہ رک نہیں سکتا اور نہ ہی میں رکوں گا۔ اس لیے جب کبھی بھی اور جہاں کہیں بھی میں قدم اٹھا سکتا ہوں، بغیر قانون سازی کے قدم اٹھاو¿ں گا تاکہ امریکی خاندانوں کے لیے مواقع وسیع ہو سکیں۔‘واضح رہے کہ دوسری بار صدر منتخب ہونے کے ایک سال بعد صدر اوباما کے ایجنڈے کی راہ میں حزب اختلاف رپبلکن پارٹی حائل ہے کیونکہ ایوان نمائندگان اور سینیٹ میں ان کی تعداد زیادہ ہے۔اپنے خطاب میں صدر اوباما نے کانگریس کے نمائندگان اور تجارتی رہنماو¿ں سے اپیل کی کہ وہ بے روزگاری کے طویل مدتی مسئلے کے حل میں ان کی مزید مدد کریں۔ انھوں نے کانگریس سے اپیل کی کہ وہ بے روزگاری انشورنس کو از سرنو بحال کریں۔ واضح رہے کہ 16 لاکھ افراد کی انشورنس حال ہی میں ختم کی گئی ہے۔انہوں نے بچوں کی تعلیم، یونیورسٹی کی قابل قدر تعلیم اور دفاتر میں خواتین کے لیے مساوی مواقع کی فراہمی پر زور دیا۔انہوں نے کانگریس سے فی گھنٹہ کم سے کم اجرت میں اضافے کی بھی اپیل کی۔ یہ اجرت فی الحال 7.25 ڈالر فی گھنٹہ ہے۔ تاہم اوباما کے کم سے کم اجرت میں اضافے کے اعلان کا نفاذ مستقبل میں ہونے والے معاہدے پر ہی ہوگا۔ اس میں صفائی کرنے والے اور تعمیراتی مزدور بھی شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں  ،،داؤدخیل کے تعلیمی میدان کا ایدھی،،

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker