تازہ ترینعلاقائی

لاہور:واپڈا3ماہ میں پانی اورپن بجلی کے 3 مزید منصوبوں پرکام شروع کردےگا

wapdaلاہور(نامہ نگار) ملک میں بجلی اور پانی کی بڑھتی ہوئی ضروریات کے پیشِ نظر واپڈا اگلے 2 سے 3 ماہ میں تین مزید منصوبوں پر تعمیراتی کام کا آغاز کر دے گا۔ مذکورہ تینوں منصوبوں پر تعمیراتی کام شروع کرنے کیلئے تیاری مکمل کی جاچکی ہے۔اِن منصوبوں میں دو ہائیڈرو پاور پراجیکٹ یعنی تربیلا چوتھا توسیعی منصوبہ اور کیال خواڑ کے ساتھ ساتھ نولانگ ڈیم پراجیکٹ شامل ہیں۔ ان منصوبوں کی بجلی پیدا کرنے کی مجموعی صلاحیت تقریباً 1540 میگاواٹ جبکہ پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت اڑھائی لاکھ ایکڑ فٹ ہے۔ یہ تینوں منصوبے واپڈا کے کم لاگت پن بجلی پیدا کرنے اور پانی ذخیرہ کرنے کے اس جامع پروگرام کا حصہ ہیں، جس کے تحت تقریباً21 ہزار میگاواٹ بجلی اور 13ملین ایکڑ فٹ سے زائدپانی ذخیرہ کرنے کے 26 منصوبے عملدرآمد کے مختلف مراحل میں ہیں۔1410 میگاواٹ پیداواری صلاحیت کا تربیلا فورتھ(Extension) پراجیکٹ تربیلا کے موجودہ پاور ہاؤس کے چوتھے توسیعی منصوبے کے طور پر تعمیر کیا جائے گا۔ اس منصوبے کے تحت تین جنریٹنگ یونٹ نصب کئے جائیں گے اور ہر یونٹ کی پیداواری صلاحیت 470میگاواٹ ہوگی۔ تربیلا چوتھے توسیعی منصوبے کے بعد تربیلا پاو ر سٹیشن کی موجودہ پیداواری صلاحیت 3478 میگاواٹ سے بڑھ کر 4888میگاواٹ ہوجائے گی۔ تربیلا فورتھ (Extension)پراجیکٹ ہر سال قومی نظام کو تقریباً ساڑھے تین ارب یونٹ بجلی مہیا کرے گا۔ منصوبے کے فوائد کا تخمینہ 30 ارب روپے سالانہ لگایا گیا ہے۔ منصوبہ کی تعمیر کیلئے عالمی بنک 840 ملین ڈالر مہیا کر رہا ہے۔122 میگاواٹ پیداواری صلاحیت کا کیا ل خواڑہائیڈرو پاور پراجیکٹ صوبہ خیبرپختونخوا کے ضلع داسو میں دریائے سندھ کے معاون دریا کیال پر تعمیر کیا جائے گا۔ منصوبہ قومی نظام کو ہر سال 42 کروڑ 60لاکھ یونٹ بجلی فراہم کرے گا ۔ منصوبہ سے ہر سال ساڑھے 3 ارب روپے کے مساوی فوائد حاصل ہوں گے۔نولانگ ڈیم پراجیکٹ صوبہ بلوچستان کے ضلع جھل مگسی میں دریائے مولا پر تعمیر کیا جائے گا۔ڈیم میں پانی ذخیرہ کرنے کی مجموعی صلاحیت اڑھائی لاکھ ایکڑ فٹ ہے جس سے 47 ہزار ایکڑ اراضی زیرِکاشت آئے گی۔ نولانگ ڈیم پراجیکٹ سے تقریباً 4اعشاریہ 4 میگاواٹ بجلی بھی پیدا ہوگی۔ منصوبہ کے فوائدکا اندازہ اڑھائی ارب روپے سالانہ ہے۔یہ امر بھی قابلِ ذکر ہے کہ قبل ازیں واپڈا گولن گول ہائیڈرو پاور پراجیکٹ اور نائے گاج ڈیم پراجیکٹ پر بھی تعمیراتی کام شروع کر چکا ہے۔ 106 میگاواٹ پیداواری صلاحیت کا گولن گول منصوبہ صوبہ خیبرپختونخوا کے ضلع چترال میں دریائے مستوج کے معاون دریا گولن گول پر تعمیرکیا جارہا ہے ۔ یہ منصوبہ ہر سال 43 کروڑ 60 لاکھ یونٹ بجلی فراہم کرے گا۔ اسی طرح نائے گاج ڈیم صوبہ سندھ کے ضلع دادو میں گاج دریا پر تعمیر کیا جارہا ہے۔ ڈیم میں پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت تقریباً 3 لاکھ ایکڑ فٹ ہے جس سے 40 ہزار ایکڑ اراضی سیراب ہوگی۔ نائے گاج ڈیم سے 4اعشاریہ 2میگاواٹ بجلی بھی پیدا ہوگی۔ منصوبہ کے سالانہ فوائد کا تخمینہ تقریباً ساڑھے 3 ارب روپے لگایا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں  لوڈشیڈنگ. وزیراعظم کی ہدایات پر عمدرآمد ممکن نہیں

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker