سائنس و آئی ٹی

پاکستان میں ویب سائیٹ فلٹرنگ کے نظام کا ازسر نو جائزہ لیا جائے گا

اطلاعات کے مطابق حکومت پاکستان کی جانب سے انٹرنیٹ پر لگایا جانے والامتنازعہ فلٹرنگ سسٹم فی الحال لاگو نہیں کیا جارہا۔

ابھی تک ملنے والی اطلاعات کے مطابق اس حوالے سے ایک کمیٹی قائم کی گئی ہے جس میں مختلف وزارتوں ، ٹیلی کام اور آئی ٹی ادارے ،  پی ٹی اے ، آئی سی ٹی اور دیگر متعلقہ محکموں کے نمائندے شامل ہیں۔ یہ کمیٹی فلٹرنگ کے تمام نظام کا از سرنو جائزہ لے گی اور اس عمل کو شفاف بنانے کے لیے اپنی تجاویز پیش کرے گی۔

یہ بھی پڑھیں  توانائی کی کمی کے شکار پاکستان کیلئے شمسی توانائی روشنی کی کرن

اس حوالے سے پاک نیوز لائیو کے مخبر کے مطابق ان اطلاعات میں کوئی صداقت نہیں کہ حکومت فلٹرنگ کا نظام نہیں لگائے گی۔ فلٹرنگ کا نظام ضرور لاگو کیا جائے گا لیکن چند ترامیم کے بعد ، تاکہ تمام شراکت دار اس سے مطمئن ہوں۔

یہ بھی پڑھیں  مسجدا لحرام میں وائے فائے انٹرنیٹ اوربلیو ٹوتھ کی سہولت مہیا کردی گئی

ICT R&D fund کے ایک نمائندے کے مطابق اس مقصدکے لیے دوبارہ Request for Proposal پیش نہیں کیا جائے گا۔ لیکن نظام کا مقصد وہی رہے گا۔

انٹرنیٹ ماہرین نے اس سے قبل ویب سائیٹ فلٹرنگ کے نظام کو مسترد کر دیا تھا۔ کیونکہ انکے مطابق حکومت اس قانون کوعوام کی آزادی رائے سلب کرنے کے لیے استعمال کرے گی ، اور کسی بھی ویب سائٹ پر فحاشی کا الزام لگا کر اسے بند کردے گی۔

یہ بھی پڑھیں  حاملہ خواتین کے اپنے ہونیوالے بچے سے رابطے کیلئے ایپلی کیشن متعارف

لیکن چند لوگوں کے مطابق یہ نظام بہت اچھا ہے لیکن اس کو شفاف بنانے کی ضرورت ہے تاکہ حکومت یا کوئی بھی فرد اسکو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال نہ کرسکے۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker