تازہ ترینروہیل اکبرکالم

یوم کشمیراور سوا لاکھ شہدا

کشمیر کشمیریوں کا اور یہ حق کوئی بھی ان سے چھین نہیں سکتا 5فروری کو دنیا بھر میں بسنے والے مسلمان اس یقین کے ساتھ یوم کشمیر مناتے ہیں کہ شائد دنیا اپنی آنکھیں کھول لے اور بے گناہ کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم رکھ سکیں نریندرمودی اور اس کے پالتوغنڈے یاد رکھیں کہ بھارتی پالتو فوج کے استعماری ہتھکنڈوں اور مظالم کے باوجود کشمیر کا بچہ بچہ آزادی کے مورچے میں ڈٹا ہوا ہے ہندوستان مقبوضہ کشمیر میں بدترین جنگی جرائم کا مرتکب ہورہا ہے عالمی برادری ہندوستان کے خلاف مداخلت کرے ہندوستان اقوام متحدہ کے چارٹر سلامتی کونسل کی قراردادوں اور انسانی حقوق کی دھجیاں اڑا رہا ہے نئی دہلی کی بدنام زمانہ تہاڑ جیل میں کشمیری رہنماؤں کو پابند سلاسل رکھ کر انہیں تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے  ہندوستان کی قابض افواج نے پورے کشمیرکو ایک کھلی جیل میں تبدیل کرکے مظالم کی انتہا کررکھی مودی سرکار اپنے پالتوغنڈوں کی مدد سے مقبوضہ کشمیرمیں گھروں کو نذر آتش کر کے کشمیریوں کو گھروں کے اندر زندہ جلاکرانکے مال و اسباب لوٹارہی ہے انسانی حقوق کی سنگین پامالیاں کی جارہی ہیں  مقبوضہ علاقہ میں جاری خون ریزی پر انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیموں کو فوری نوٹس لینا چاہیے بین الاقوامی برادری کی بے حسی کی وجہ سے ہندوستان مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم ڈھا رہا ہے مقبوضہ وادی میں آئے روز سرچ آپریشن کی آڑ میں کشمیریوں کی نسل کشی کی جا رہی ہے مرد خواتین اور بزرگوں پر تشدد معمول کی بات بن چکی ہے نوجوانوں کو ہدف بنا کر جعلی مقابلوں میں شہید کیا جا رہا ہے اسرائیل طرز پر ہندوستان مقبوضہ جموں وکشمیر میں بستیاں بسانے کے در پے ہے مسلم اکثریت اور اقلیت میں بدلنے کی گھناؤنی سازش پر عمل پیرا ہے جو عالمی قوانین کے خلاف ہے عالمی برادری نے نوٹس نہ لیا تو مقبوضہ جموں وکشمیر میں بڑا المیہ رونما ہو سکتاہے وہاں پر آر ایس ایس کے انتہا پسندہندوؤں کو ڈومیسائل جاری کیے جا رہے ہیں مقبوضہ کشمیر کی صورت حال تشویش ناک ہے انسانی حقوق کی سر عام خلاف ورزیاں معمول بن چکی ہیں۔مودی سرکار نے پانچ اکتوبر2019کو یک طرفہ کاروائی کرتے ہوئے کشمیرعوام کو بھارتی آئین میں ملی ہوئی خصوصی حیثیت شق نمبرA35-370ختم کردی جس کے بعدکشمیری عوام 900دنوں سے زائد عرصے سے بھارتی فوج کے محاصرے میں ہے مقبوضہ وادی کواس وقت دنیا کی سب سے بڑی جیل میں بدل دیا گیا ہے عالمی ضمیر اورحقوق انسانی تنظیموں کے خاموش تماشائی کردارکی وجہ سے سواکروڑ کشمیری عوام بھارتی فوج کے کرفیومیں زندگی گذارنے پرمجبور ہیں اس وقت تک سوالاکھ کشمیریوں کو شہید کیاجاچکاہے فسطائی بھارتی افواج بین الاقوامی برادری کی طرف سے تسلیم شدہ حق خودارادیت کے جائز مطالبے کو دبانے کے لئے اپنے دس لاکھ سے زائد فوجیوں کو تعینات کر کے وسیع پیمانے پر قتل وغارت اور تباہی مچارکھی ہے بھارتی درندوں نے کشمیریوں کے بنیادی حقوق غصب کرنے اور ان کے ساتھ جانوروں سے بدتر سلوک اپنا وطیرہ بنا رکھا ہے فوجی طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا جارہا ہے جو انتہائی افسوسناک ہے جبکہ قابض ہندوستانی افواج ریاستی دہشت گردی سے پلواما اور چرارشریف میں کشمیریوں کی شہادت عالمی برادری کے منہ پر طمانچہ ہے ہندوستان مقبوضہ کشمیر میں جنگی جرائم کا مرتکب ہورہا ہے بین الاقوامی برادری کی خاموشی اور شہ سے کشمیرمیں قتل عام جاری رکنے کا نام نہیں لے رہا شدید سردی کے باوجود بزرگوں اور خواتین کو کھلے آسمان تلے تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے بنیادی انسانی حقوق غصب کرتے ہوئے انٹرنیٹ،ٹیلی فون سروسز معطل کررکھی ہیں کشمیر کو 912دنوں سے دنیا کی بڑی جیل میں تبدیل کررکھا ہے عالمی برادری ہندوستان کے مظالم پر خاموشی کا روزہ توڑ کر اپنا مطلوبہ کردار ادا کرے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن کی رپورٹ جس نے ہندوستان کے مکروہ چہرے کو بے نقاب کیا ہے سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ انسانی حقوق کمیشن رپورٹ کی روشنی میں ہندوستان کے خلاف کارروائی کرے کشمیری اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق اپنے پیدائشی حق کے لیے جدوجہد کررہے ہیں مہذب دنیا نے اپنا مطلوبہ کردار ادا نہ کیا تو انسانی تاریخ کا بڑا المیہ رونما ہو گا جس سے پوری دنیا کا امن تباہ ہو گا  بھارت ایک مکار اور دہشت گرد ملک ہے اور اس وقت بھارت میں مودی کے مظالم سے کوئی بھی اقلیت محفوظ نہیں ہے بلخصوص مسلمانوں کے قتل عام کے اعلانات اور مسلمانوں کو بھارت چھوڑنے کی دھمکیوں نے بھارت کا بد نما چہرہ دنیا کے سامنے لاکھڑا کیا ہے بھارت ایک انتہا پسند ہندو ریاست ہے  جہاں مسلمانوں سمیت کسی بھی دوسرے مذاہب کے لوگوں کی زندگیاں مفلوج ہو کر رہ گئی ہیں بھارت پوری دنیا میں ذلیل اور رسوا ہو چکا ہے اس لیے  اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق تنازعہ کشمیر جلد حل کیا جائے جو 1948 سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں زیر التواء ہیں  عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ ہندوستان کے خلاف مداخلت کرتے ہوئے کشمیریوں کو اپنے عہد کے مطابق حق خودارادیت دلانے کے لیے کردار ادا کرے کیونکہ ہندوستان کی قیادت نے خود اقوام متحدہ میں جاکر عہد کیا تھا کہ وہ کشمیریوں کو حق خودارادیت دے گی اور کشمیری اپنے مستقبل کا فیصلہ کرسکیں گے کشمیری اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق اپنے حق کے حصول کے لیے جدوجہد کررہے ہیں بھارت کی تمام ترمظالم وشرانگیزی کے باوجود وہ کشمیری عوام سے جدوجہد آزادی کا جذبہ اورشوق شہادت ختم نہیں کراسکی ہے پاکستان میں بسنے والے سبھی لوگوں کے دل اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں اوروہ وقت دورنہیں کشمیری عوام کی جدوجہد اور شہداء کی قربانیوں کے نتیجے میں ایک دن وادی کشمیرپر آزادی کا سورج طلوع ہوکر رہے گا۔

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button