تازہ ترینکالم

یوم آزادی اور ہماری ذمہ داریاں

mriza rizwanوطن عزیز پاکستان کا یوم آزادی منانے کی تیاریاں زوروشور سے جاری ہیں ہر طرف سبز ہلالی پرچم کی بہار ہے سخت گرمی میں ٹھنڈے ترین کمروں میں بیٹھ کر سرکاری و غیر سرکار ی سطح پر تقریبات کا انعقاد کرکے بانی پاکستان قائد اعظم محمد جناح ؒ اور تحریک پاکستان کے عظیم کارکنانؒ سے اظہار یکجہتی اور وطن عزیز پاکستان کو عظیم سے عظیم تربنانے کیلئے بلند و بانگ دعوؤں اوران کے ساتھ اپنی ’’مخلصانہ ‘‘محبتوں کا اظہار ہمارے نزدیک ایک انتہائی آسان طریقہ اور اولین فریضہ سمجھتے ہوئے سرانجام دیتے ہیں لیکن حقیقی معنوں میں ان بلند و بانگ نعروں اور دعوؤں میں حقیقت پر مبنی شاید بھی نہیں ہوتا ۔کیونکہ گلی بازاروں میں زمیں پر پڑی رنگ برنگی جھنڈیوں کو دیکھ ہماری وطن عزیز پاکستان اور بانی پاکستان سے محبت کا پول کھل کر سامنے آجاتا ہے یہ جھنڈیاں جو یوم آزادی کی بہارکے علاوہ عام دنوں میں بھی گلی محلوں کی چھوٹی چھوٹی دوکانوں پر ہماری ہی بچوں کے دل بہلانے اور ان کے کھیل کو مزید فروغ دینے کیلئے باآسانی مل جاتی ہیں اور ان عام دوکانوں پر فخریہ طور پر فروخت ہورہی ہیں جو چند لمحے کھیل کے بعد ان پھینک دیتے ہیں اور عین ایسی ہی ایک صورتحال دوسری جانب بھی ہے جہاں بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح ؒ زمیں پر پڑے ’’ جعلی نوٹوں‘‘پر چھپی تصویرحسرت بھری نگاہ سے ہماری ’’بے لوث ‘‘ محبت کی جانب دیکھ رہی ہے اور یہ جعلی نوٹ بھی عرصہ دراز سے ہمارے بچوں کے ’’چھتوں و تھڑوں‘‘پر کھڑے ہو کر نوٹ نچھاور کرنے کے کھیل کو فروغ دیتے ہیں مگر لمحہ فکر یہ ہے کہ جھنڈیوں اور بانی پاکستان کی تصویر والے ان نوٹوں کے زمین پر پڑا دیکھ کر کیا ہمارا ضمیر ہمیں گریبان سے پکڑ کر جھنجھوڑتا نہیں کہ ہم اپنے بچوں کو پاکستان اور بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح ؒ کی قدرو منزلت اور عزت و احترام کرنے کا عملی درس دینے سے کیوں قاصر ہیں؟کیا ان کے تقدس کو برقرار رکھنا ہماری اولین ذمہ داری نہیں ہے ؟ کیا ہم اپنے عظیم قائد اور قیام پاکستان وقت اپنا کلیدی کردار ادا کرنیوالے اپنے محسنوں کے عزت و احترام کو برقرار رکھنے کیلئے کوئی عملی حکمت عملی وضع نہیں کرسکتے ؟کیا ہم ان کی تصاویر کی بے حرمتی کی روک تھام کیلئے عملی اور فوری اقدامات نہیں کرسکتے ؟
سچ تو ہے کہ یہ سوہنی دھرتی اللہ رب العزت کا خاص انعام ہے اور یہ انعام جن تحریک پاکستان کی مشاہیر اور کارکنان سمیت ہمارے بڑوں کی لازوال قربانیوں اور دعاؤں کا ثمر ہے اس کی قدرومنزلت تو وہی سمجھ سکتے ہیںیاپھر وہ سمجھ سکتے ہیں جو ایسی لازوال قربانیوں کی عظیم داستان رقم کرکے ملک دشمن عناصر کا خاتمہ اور ملکی دفاع کا اہم قومی فریضہ سرانجام دے رہے ہیں پوری قوم دلی سلام پیش کرتی ہے اپنی افواج کے ان شہیدوں ، غازیوں اور مجاہدوں پر جن کی بدولت آج پاکستان پوری دنیا کے نقشے پر ایک پرُ امن ملک بن کر اُبھرا ہے اور پوری دنیا افواج پاکستان کے ان محب وطن اور مخلصانہ اقدامات کو اعلیٰ سطح پر سراہا جارہاہے سلام ہے قوم کے ان ہونہار بیٹوں پر جو اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرکے وطن عزیز پاکستان کے پرچم کوعالمی سطح پر بلند سے بلند کرکے قوم کا سرفخر سے بلند کررہے ہیں اور ہماری افواج پاکستان کے جوانوں کی قربانیاں قیام پاکستان سے لیکر آج جہاں ’’استحکام پاکستان‘‘کے خواب کو شرمندہ تعبیر بنانے میں تاریخ کے اوراق پر سنہری قلم سے سنہری حروف کی صورت رقم ہورہے ہیں اور ملک وقوم
پر ان کے اس احسان عظیم کو کسی صورت فراموش نہیں کیا جاسکتابلکہ وطن عزیز پاکستان کو عظیم سے عظیم تر بنانے جیسے محب وطن اقدامات پرہماری قوم ان کی لازوال قربانیوں اور خدمات کو ہمیشہ یاد رکھی گی ۔
محترم قارئین !
یہ وطن ہمار ا اپنا وطن ہے اوربلاشبہ اس کی بنیاد کلمہ حق پر رکھی گئی ہے جو ایک عملی جہد مسلسل کے بعد معرض وجود میں آیا ہے جس کے تقدس کو بحال و برقرار رکھنا ہر صورت ہمارا اولین فریضہ ہونا چاہئے جس کے تحفظ کی خاطر اپنی جان تک قربان کردیں گے جیسے جذبے کو عملی فروغ دینا اور اپنے بچوں سمیت اپنی آنیوالی نسلوں کی ’’نظریہ پاکستان ‘‘اور ’’دوقومی نظریہ‘‘کے عین مطابق آبیاری کرتے ہوئے ایک روشن مستقبل قریب کی امید رکھتے ہوئے انہیں پاکستان کا ایک اہم اور ذمہ دار فرد بنانے میں اپنا عملی و کلیدی کردار ادا کریں تاکہ ہم اپنے بچوں کو پاکستان کی حقیقی قدروقیمت سے باخوبی آگاہ کرنا بھی وطن عزیز پاکستا ن سے حقیقی محبت کا منہ بولتا ثبوت ہونا چایئے اور اپنے اسی وطن عزیز کی آزادی کا جشن مناتے وقت بانی پاکستان قائداعظم محمد جناح ؒ ، حکیم الاامت حضرت علامہ اقبال ؒ ، کارکنان تحریک پاکستان سمیت قیام پاکستان کے وقت اپنی مخلصانہ خدمات و جانوں کا نذرانہ پیش کرکے ہمیں ایک حقیقی آزاد اور خودمختار مملکت خداداد کا عظیم تحفہ دینے والے عظیم محسنوں اور سبز ہلالی پرچم کے تقدس ، عزت و احترام کو یقینی بنانے ساتھ ساتھ اپنے بچوں کو بھی ان کے احترام کیلئے شناسائی بخشی جائے اور انہیں جھنڈیوں اور نوٹوں پر چھپی بانی پاکستان کی تصویر کی بے حرمتی سے گریز کرنے کا پابند بنا کر ایک اہم و قومی فریضہ سرانجام دینا ہوگاتاکہ ہمارے بچے اور ہماری آنیوالی نسلیں کل کو وطن عزیز پاکستان کے عظیم محافظ بن کر ملک وقوم کی عملی خدمات کا فریضہ سرانجام دے سکیں ۔اللہ سے دعاہے کہ اللہ رب العزت ہمیں وطن عزیز کی حقیقی خدمت کے ساتھ ساتھ اپنے محسنوں کو عزت و احترام عملی توفیق عطا فرمائے (آمین )

یہ بھی پڑھیں  بالی ووڈ اداکارہ کرشمہ کپور آج اپنی 39 ویں سالگرہ منا رہی ہیں

note

یہ بھی پڑھیے :

Back to top button

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker